Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / نالوںکی صفائی اسکام، جی ایچ ایم سی کے 12 انجینئرس گرفتار

نالوںکی صفائی اسکام، جی ایچ ایم سی کے 12 انجینئرس گرفتار

بے قاعدگیوں میں کنٹراکٹرس سے تعاون کی توثیق، مزید عہدیداروں کی گرفتاری ممکن
حیدرآباد ۔ 6 مئی (سیاست نیوز) نالوں کی صفائی اسکام میں گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے 12 انجینئرس گرفتار ہوئے ہیں۔ بے قاعدگیوں میں کنٹراکٹرس سے تعاون کرنے کی توثیق ہوگئی۔ مزید 11 گرفتاریوں کا امکان ہے۔ دوسرے زونس میں بھی بے قاعدگیوں کی تحقیقات جاری ہے۔ بدعنوانیوں اور بے قاعدگیوں میں ملوث ہونے والے جی ایچ ایم سی کے 12 انجینئرس، پی پریرنا، پاپماں، کامیشوری، وشیدھر، شنکر، سرینواس، لال سنگھ، نائیڈو، سنتوش، اشوک، موہن راؤ، جمیل شیخ کو پولیس نے گرفتار کرلیا۔ بعدازاں شخصی ضمانت پر رہا بھی کردیا۔ قدیم ایم سی ایچ اور موجودہ جی ایچ ایم سی کی تاریخ کا یہ پہلا موقع ہیکہ اتنی بڑی تعداد میں انجینئرس کو گرفتار کیا گیا۔ واضح رہیکہ نالوں کی صفائی اسکام میں ابھی تک 18 کنٹراکٹرس گرفتار ہوئے ہیں ان سے تعاون کرنے کے الزام میں انجینئرس کی گرفتاریوں کا سلسلہ شروع ہوا ہے۔ گریٹر حیدرآباد کے حدود میں واقع 390 کیلو میٹر نالوں کی ہرسال صفائی کی جاتی ہے۔ گذشتہ سال نالوں کی صفائی پر 24 کروڑ روپئے خرچ کئے گئے۔ سنٹرل زون کے کاموں سے متعلق بلز کی ادائیگی میں بے قاعدگیاں ہونے آڈٹ ریکارڈ میں نشاندہی ہوئی۔ فرضی بلز پیش کرتے ہوئے بلز وصول کرنے کا انکشاف ہوا ہے۔ نالوں کی صفائی کے بعد مٹی و دیگر اشیاء کو موٹر سیکل، کار اور آٹوز میں منتقل کرنے کا دعویٰ کرتے ہوئے نقلی بلز پیش کیا گیا۔ آڈٹ عہدیداروں نے بتایا کہ 1.18 کروڑ کے نقلی بلز پائے گئے ہیں اس کی اطلاع ملتے ہی انجینئرنگ شعبہ کے اعلیٰ عہدیداروں نے سی سی ایس پولیس میں شکایت درج کرائی۔ اس کی تحقیقات کرنے والی پولیس نے ایک منظم سازش کے تحت جی ایچ ایم سی کو دھوکہ دینے اور اس کا خزانہ لوٹنے کی کوشش کرنے کی نشاندہی کی ہے۔ جملہ 27 کنٹراکٹرس میں 7 کنٹراکٹرس کو گرفتار کیا گیا۔ بعدازاں کنٹراکٹرس سے تعاون کرنے والوں کے بارے میں تحقیقات کی گئی تو پتہ چلا کہ 23 اسسٹنٹ انجینئرس، اسسٹنٹ ایگزیکیٹیو انجینئرس کا بے قاعدگیوں سے تعلق ہونے کا پتہ لگایا گیا ہے۔ ان کی منظوری کے بعد ہی بلز فینانس شعبہ سے رجوع ہوئے۔ بے قاعدگیوں کا سامنا کرنے والے انجینئرس کی سلسلہ وار پوچھ تاچھ کے بعد پہلے 12 انجینئرس کو گرفتار کیا گیا۔ مزید 11 انجینئرس کو بہت جلد پوچھ تاچھ کیلئے طلب کرنے کا امکان ہے۔ پولیس کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے بتایا کہ اس اسکام میں جی ایچ ایم سی کے دوسرے عہدیداروں سے بھی پوچھ تاچھ شروع کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT