Sunday , October 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ناندیڑ کے عوام نے پرانے شہر کی ووٹ کٹوا پارٹی کو مسترد کردیا

ناندیڑ کے عوام نے پرانے شہر کی ووٹ کٹوا پارٹی کو مسترد کردیا

سیکولر کانگریس کی کامیابی، فرقہ پرست جماعتوں کے منہ پر طمانچہ، محمد علی شبیر کا بیان
حیدرآباد 12 اکٹوبر (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے ناندیڑ میں سیکولر کانگریس کی شاندار کامیابی کو ہندو مسلم فرقہ پرست جماعتوں بی جے پی، شیوسینا اور مجلس کے منہ پر طمانچہ قرار دیتے ہوئے کہاکہ پرانے شہر کی ووٹ کٹوا پارٹی کو یکسر نظرانداز کردیا۔ فرقہ پرستی پر سیکولرازم نے عظیم کامیابی حاصل کی۔ یوروپ کے دورے پر رہنے والے محمد علی شبیر نے ناندیڑ میں کانگریس کی تاریخی کامیابی پر اسپین سے بذریعہ پریس ریلیز اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے سابق چیف منسٹر مہاراشٹرا و رکن پارلیمنٹ اشوک چوہان کو مبارکباد دی اور کہاکہ پرانے شہر کی مقامی جماعت نے سیکولر ووٹوں کو تقسیم کرانے اور فرقہ پرستوں کیلئے راستہ ہموار کرنے کی ہرممکن کوشش کی مگر وہ اپنے مقصد میں کامیاب نہیں ہوئی۔ ناندیڑ کے عوام نے مجلس، بی جے پی اور شیوسینا کو سبق سکھاتے ہوئے سیکولرازم کا پرچم لہرایا ہے۔ قائد اپوزیشن قانون ساز کونسل نے کہاکہ مجلس کے قائدین نے سارے پرانے شہر کی ترقی کا سہرا ناندیڑ میں اپنے سر باندھنے کی کوشش کرتے ہوئے مقامی عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کی تھی جبکہ وہ (محمد علی شبیر) نے اشوک چوہان کے ساتھ ناندیڑ میں کانگریس کی انتخابی مہم میں حصہ لیتے ہوئے شہر حیدرآباد کے پرانے شہر میں 50 سال سے راج کرننے والی مجلس کی ناکامیوں کی قلعی کھول دی تھی۔ تھوڑی سی بارش سے پرانا شہر جھیل میں تبدیل ہورہا ہے اور ٹریفک مسائل پیدا ہوجاتے ہیں۔ ناندیڑ کے عوام نے حقائق کا جائزہ لینے کے بعد ووٹ کٹوا پارٹی کو مسترد کردیا۔ اپنے ووٹوں کو تقسیم سے بچاتے ہوئے ہندو مسلم دونوں فرقہ پرست جماعتوں کو شکست سے دوچار کردیا۔ محمد علی شبیر نے بتایا کہ وہ اپنی انتخابی مہم ناندیڑ کے دوران عوام سے ملاقات کرتے ہوئے ان کے رجحان اور نبض دونوں پڑھ چکے تھے۔ عوام فرقہ پرستی کے جھانسے کا شکار ہونے کیلئے ہرگز تیار نہیں تھے۔ ناندیڑ کے عوام نے مرکز اور مہاراشٹرا بی جے پی حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف اپنے ووٹ کے ذریعہ سزا دی ہے۔ قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے پرانے شہر کے عوام کو اپنے مسائل کا جائزہ لیتے ہوئے مجلس کی تائید کرنے پر ازسرنو جائزہ لینے کا مشورہ دیا۔ مجلس کا کھاتہ نہ کھلنے دینے پر ناندیڑ کے عوام کو مبارکباد دی۔ 2019 ء کے پارلیمانی انتخابات میں کانگریس بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل کرنے کی پیش قیاسی کی۔

TOPPOPULARRECENT