Sunday , September 24 2017
Home / دنیا / ناٹو کا ماحولیاتی تبدیلی کیخلاف عالمی جنگ کا اعلان

ناٹو کا ماحولیاتی تبدیلی کیخلاف عالمی جنگ کا اعلان

ورجینیا، 4 مئی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ پیرس موسمیاتی معاہدے سے دستبردار ہونے یا اس میں برقرار رہنے کا فیصلہ کرنے والے ہی ہیں، اس کے باوجود شمالی اوقیانوس معاہدہ تنظیم ( ناٹو) نے آج کہا کہ ماحولیاتی تبدیلی عالمی سلامتی کے لیے بڑا خطرہ ہے اور تمام ممالک کو اس کے خلاف ایک ساتھ مل کر لڑنا چاہیے ۔ ناٹو کے سربراہ ایلائڈ کمانڈر جنرل ڈینس میرسیئرنے ورجینیا میں ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ اس بات کی انتہائی ضرورت ہے کہ اقوام متحدہ ماحولیاتی تبدیلی کے مسئلے پر تمام ممالک کو ایک ساتھ لے کر چلے اور تمام ممالک کے درمیان ہم آہنگی بنا کر رکھے ۔انہوں نے کہا کہ اگر ایک قوم، خاص طور پر بڑا ملک ، اگر کسی مسئلہ کو تسلیم نہیں کرتا تو ہمیں اسے حل کرنے میں بہت مشکلات کا سامنا کرنا ہوگا۔ تاہم، انہوں نے امریکہ کا نام نہیں لیا لیکن امریکہ دنیا کی سب سے بڑی معیشت ہے اور چین کے بعد گرین ہاؤس گیس کا سب سے زیادہ اخراج کرنے والا دوسرا ملک ہے ۔ قابل ذکر ہے کہ مسٹر ٹرمپ پیرس موسمیاتی تبدیلی معاہدہ کا جائزہ لے ہے ہیں اور اس پر غور کر رہے ہیں کہ امریکہ کو پیرس موسمیاتی معاہدے کے تحت قوانین کو ماننا چاہیے یا نہیں۔ عالمی موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے لیے سال 2015 میں دنیا کے 200 ممالک نے گرین ہاؤس گیس کے اخراج کو کم کرنے اور ماحولیاتی تبدیلی سے نمٹنے کیلئے ترقی یافتہ ممالک کی جانب سے فنڈ مختص کرنے پر اتفاق کیا تھا۔دوسری جانب ٹرمپ نے اس معاہدے پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس معاہدے کے تحت امریکہ کے ساتھ غلط سلوک کیا گیا جس کی وجہ سے امریکہ کو عالمی ماحولیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے لیے دوسرے ممالک کے مقابلے زیادہ پیسہ خرچ کرنا پڑتا ہے ۔ ایسی امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ مسٹر ٹرمپ اگلے ایک یا دو ہفتے میں پیرس معاہدے سے دستبردار ہونے یا اس میں برقراررہنے کا اہم فیصلہ کرسکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT