Monday , March 27 2017
Home / دنیا / ناپسندیدہ ترک وزیر کے اخراج کا دفاع

ناپسندیدہ ترک وزیر کے اخراج کا دفاع

عوام کیلئے ناپسندیدہ شخصیت کا ملک سے اخراج درست ‘وزیر اعظم نیدرلینڈ کا بیان
دی ہیگ۔12مارچ ( سیاست ڈاٹ کام)  وزیراعظم نیدر لینڈ مارک رٹ نے آج اپنی حکومت کے فیصلہ کا دفاع کیا کہ ترک وزیر کو ملک سے خارج کردیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ نیدر لینڈس کیلئے ناپسندیدہ سیاح تھیں ‘ کل جو کچھ پیش آیا مکمل طور پر ناقابل قبول تھا ۔ انہوں نے سرکاری این او ایس نشری ادارہ پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ترک وزیر فاطمہ بتول سایانکایا نے ولندیزی حکومت کی حکومت ترکی سے درخواستوں کو نظرانداز کردیا جن میں انہیں روٹرڈیم سفر کی اجازت نہیں دی گئی تھی اور یہاں ایک جلسہ عام کے انعقاد کا منصوبہ بنایا ۔انہوں نے کہا کہ یہ ہمارے لئے ناپسندیدہ تھا کہ وہ یہاں آئیں ‘ وہ پولیس کی کارروائی کی وضاحت کررہے تھے جس نے کایا کو اپنی نگرانی میں جرمنی کی سرحد تک پہنچایا تھا ۔ آج صبح اولین ساعتوں میں انہیں نیدر لینڈ سے خارج کردیا گیاتھا ۔ وزیراعظم نے کہا کہ نیدر لینڈکے شہری بھی ہیں جو اپنے ملک پر فخر کرتے ہیں ‘ اگر وہ ترکی کے کسی شہری کو اپنے وطن میں دیکھنا نہیں چاہتے تو ہم ان کی مرضی کو نظرانداز نہیں کرسکتے ۔ سینکڑوں ترکی نژاد نیدرلینڈ کے شہری ہیں جو قونصل خانہ کے روبرو جمع ہوگئے تھے تاکہ کایا کہ نیدرلینڈ سے اخراج کے خلاف احتجاج کرسکیں ۔ ترک وزیر کایا کو ایک جلسہ عام سے خطاب کرنے سے روک دیا گیا تھا ‘ وہ ترکی میں حکومت کے اختیارات میں اضافہ کی تائید ترک باشندوں سے حاصل کرنے کیلئے تقریر کرنے والی تھیں  ۔ نیدر لینڈ میں چار لاکھ ترکی شہری مقیم ہیں ۔ یہ ترکی نژاد ہیں لیکن نیدر لینڈس کے شہری ہیں ۔ حکومت ترکی اس برادری کے ووٹ حاصل کرنا چاہتی ہیں ۔ 16اپریل کو یورپ کے انتخابات مقرر ہیں اس سے قبل وہ صدارتی اختیارات میں اضافہ کیلئے استصواب عامہ کروانے چاہتی ہیں ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT