Wednesday , October 18 2017
Home / سیاسیات / نتیش کمار نے بابائے قوم کو دھوکہ دیا: تیجسوی یادو

نتیش کمار نے بابائے قوم کو دھوکہ دیا: تیجسوی یادو

سابق ڈپٹی چیف منسٹر و آر جے ڈی لیڈر نے ’جنادیش اپمان یاترا‘کا آغاز کیا
پٹنہ، 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) راشٹریہ جنتا دل کے نوجوان لیڈر اور بہار کے سابق نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے وزیر اعلی نتیش کمار پر بابائے قوم مہاتما گاندھی کو دھوکہ دینے کا الزام لگاتے ہوئے باپو سے’ہے رام‘سے ‘شری رام’ میں پلٹی مار کر بی جے پی کے ساتھ جاکر مل جانے والے لیڈروں کوعقل سلیم کی دعا کی ہے ۔ یادو نے بابائے قوم مہاتما گاندھی کے میدان کار مشرقی چمپارن ضلع کے موتیہاری سے وزیر اعلی کے خلاف مینڈیٹ کی توہین کرنے پر ’جنادیش اپمان یاترا‘ آغاز کرنے کے بعد سوشل نیٹ ورکنگ سائٹ فیس بک پریاترا سے متعلق کئی تصاویر کا اشتراک کرتے ہوئے لکھا، ’’اے قوم اور ہمارے پیارے باپو گاندھی، آپ کی آزادی کی تحریک کی پہلی لیبارٹری چمپارن سے یاترا شروع کرنے کا مقصد ہے ، ان اقدار کو یاد کرنا جنہیں آپ ہندوستان کی بنیاد بنانا چاہتے تھے ۔ ان میں سب سے زیادہ محبوب اقدار تھے عدم تشدد اور محبت۔ آپ تمام مذاہب کودرمیان اتحاد کے ساتھ ایک ایسے ہندوستان کا خواب دیکھ رہے تھے جہاں ایک مذہب کے لوگ کسی بھی دوسرے مذہب کے لوگوں پر خواہ وہ کسی بھی مذہب کو ماننے والے ہو ان پر اپنے جینے ، رہنے ،برداشت اور رسم و رواج کا طریقہ نہیں تھوپیں گے ۔ باپو، آپ کا مقصد محروموں اور غریبوں کو برابری کا حق اور عزت دینے کا تھا۔‘‘ سابق نائب وزیر اعلی نے یاترا کے مقاصد کا حوالہ دیتے ہوئے کہا، ’’یہ یاترا کفارہ ہے ہماری اپنی کمزوریوں کیلئے جن کی وجہ سے ہم ان اقدار سے دور ہو گئے اور شرارتی قسم کے لوگوں کے ساتھ عوامی فلاح اور اتحاد تلاش کرنے چلے تھے ۔ اب ہماری یہ قرارداد ہے کہ ہم اپنی کمزوریوں کو تسلیم کریں گے اور ان پر فتح حاصل کرکے وسیع طور پران اقدار کی تشہیر کریں گے ۔ ملک کے کسی بھی حصے میں اگر کوئی ناانصافی کا شکار ہوتا ہے تو ہماری اجتماعی ذمہ داری ہے کہ ہم اس کی دادرسی کریں۔ سماجی ناانصافی، اقتصادی نابرابری، آمریت اور نفرت کی بنیاد پر ہم ملک میں امن اور عدم تشددقائم نہیں کر سکتے ۔‘‘یادو نے آگے لکھا، ’’لوگوں کے اعتماد کو چکناچور کرنے والوں کے خلاف ہم جمع ہوئے ہیں۔ ہم انسانیت، ترقی، اعتماد اور محبت کیلئے سیاست کرنے کے حق میں ہیں۔ اقتدار صرف اس کا ایک ذریعہ ہے ۔ ہم امید کرتے ہیں کہ اس یاترا کے ذریعے ہم بہار کے عوام کے اندر انصاف، برابری اور امن کے احساس کے ساتھ اپنی سیاست کو شامل کرینگے اور بہار کو ایک ترقی یافتہ صوبہ بنانے میں جی جان سے لگ جائینگے ۔ اگر جانے انجانے میں ہم جیسے نوجوانوں سے کوئی غلطی ہوئی ہو تو آپ سے معذرت خواہ ہیں۔ آخر میں ہم آپ سے دعا ہے کہ ہمیں اتنی طاقت اور قوت دینا کہ ہم معاشرے کی آخری قطار میں کھڑے آخری شخص کو پہلے صف میں کھڑے پہلے شخص جیسا احترام، طرز زندگی، تعلیم اور صحت جیسی سہولیات دے سکیں۔
اے باپو، وہ مفادپرست لوگ جو آپ کے قاتلوں سے خوف زدہ ہو کر ‘ہے رام’ سے ‘جے شری رام’ میں پلٹی مار گئے انہیں آپ عقل سلیم سے نوازیں۔

TOPPOPULARRECENT