Thursday , September 21 2017
Home / عرب دنیا / نجران میں سعودی فوج کے ہاتھوں کئی حوثی باغی ہلاک

نجران میں سعودی فوج کے ہاتھوں کئی حوثی باغی ہلاک

Military vehicles carrying Gulf Arab soldiers arrive at Yemen's northern province of Marib September 8, 2015. A Saudi-led alliance has deployed 10,000 troops to Yemen, Qatari news channel Al Jazeera said on Tuesday, in an apparent sign of determination to rout Iran-allied Houthi forces after they killed at least 60 Gulf Arab soldiers on Friday. REUTERS/Stringer

ریاض 16 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب کی بری فوج نے یمن کے سرحدی علاقے نجران سے یمن کے اندر گھس کرحوثی باغیوں کے خلاف آپریشن میں درجنوں جنگجوئوں کو ہلاک اور متعدد کو حراست میں لے لیا ہے۔اتحادی فوج کو وسطی یمن میں مآرب کے مقام پر بھی غیرمعمولی کامیابی حاصل ہوئی ہے اور شمالی اور مغربی محاذوں پر اپاچی ہیلی کاپٹروں کی بمباری کے ساتھ ساتھ شہر کے اہم مقامات سے حوثی باغیوں کو نکال باہر کیا گیا ہے۔تعز میں بھی گھمسان کی لڑائی کی اطلاعات ہیں۔ مزاحمتی فورسز نے حوثیوں اور علی صالح کی وفادار ملیشیا کے مشترکہ حملے پسپا کرتے ہوئے دشمن کو بھاری جانی نقصان سے دوچار کیا ہے۔یمن میں فوجی محاذ پر گرما گرمی کے ساتھ ساتھ مسئلے کے سیاسی حل کے لیے بھی کوششیں ایک بار پھر تیزہوگئی ہیں۔اقوام متحدہ کے یمن کے لیے خصوصی مندوب اسماعیل ولد الشیخ احمد آج دوبارہ ریاض پہنچ رہے ہیں جہاں وہ سعودی اور یمنی قیادت سے بات چیت کریں گے۔ بعد ازاں ان کی مسقط میں حوثی باغیوں کے نمائندوں سے ملاقات بھی متوقع ہے۔ ان ملاقاتوں کا مقصد یمن میں جاری بحران کے سیاسی حل کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنا ہے۔ یمن کی جلا وطن حکومت کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی قرار داد 2216 کے دائرہ کار میں رہتے ہوئے بات چیت کے لیے تیار ہے۔ بشرطیکہ فریق ثانی بھی اسی قرارداد کے دائرہ کار میں بات چیت کرنے پرآمادگی کا اظہار کرے۔

 

سعودیہ میں فائرنگ کے بعد دو مشتبہ افراد گرفتار
ریاض ۔ 16 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب کی پولیس نے دو مشتبہ افراد کو گرفتار کیا اور دو دیگر کی متلاشی ہے جو فرار ہوگئے جبکہ فائرنگ کے واقعات پیش آئے اور دھاوؤں میں ایک بم بیلٹ ضبط کیا گیا ہے۔ پولیس نے آج کہا کہ بندوق کی فائرنگ کے علحدہ واقعات منگل کی شام ریاض کے علاقوں میں پیش آئے جبکہ عہدیداروں نے مختلف گروپوں کے تعلق سے یہ تحقیقات شروع کر رکھی ہے۔ وزارت داخلہ نے اس بیان میں کہا کہ یہ دھاوے اس سال اسلامک اسٹیٹ گروپ کی جانب سے مسجدوں پر سلسلہ وار حملوں کے تناظر میں کئے جارہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT