Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / نریندر مودی اپنی شبیہہ سدھارنے ٹی آر پی سیاست میں ملوث

نریندر مودی اپنی شبیہہ سدھارنے ٹی آر پی سیاست میں ملوث

New Delhi: Congress MP Rahul Gandhi addressing the media at Parliament house in New Delhi on Wednesday. PTI Photo by Atul Yadav (PTI11_23_2016_000115B)

وزیراعظم کے گھمنڈ اور نااہلی سے عوام شدید تکالیف کا شکار، راہول گاندھی کا الزام
نئی دہلی،2دسمبر(سیاست ڈاٹ کام)کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے کہا ہے کہ نوٹوں کی منسوخی کا اعلان کرکے وزیراعظم نریندر مودی نے دنیا کی سب سے تیزی سے بڑھ رہی معیشت کے خلاف ہی جنگ چھیڑ دی ہے ۔مسٹر گاندھی نے کانگریس پارلیمانی پارٹی کی آج یہاں ہوئی میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے کہا ”وزیراعظم کنے آٹھ نومبر کو کسی کی صلاح کے بغیر اپنے اس فیصلے سے دنیا کی سب سے تیزی سے بڑھ رہی معیشت کے خلاف ہی جنگ چھیڑ دی ہے ۔مسٹر گاندھی نے پہلی بار پارلیمانی پارٹی کی میٹنگ کی صدارت کی ہے ۔کانگریس کی صدر سونیا گاندھی کی صحت ٹھیک نہ ہونے کی وجہ سے وہ میٹنگ میں نہیں آسکیں تھیں۔انہیں اسی ہفتے بخار ہونے کی وجہ سے اسپتال میں بھی داخل کرانا پڑا تھا حالانکہ دو دن بعد انہیں چھٹی دے دی گئی تھی۔اس سے پہلے مسٹر گاندھی نے کانگریس کی ورکنگ کمیٹی کی صدارت بھی کی تھی۔مسٹر گاندھی نے کہا کہ وزیراعظم کے نوٹوں کی منسوخی کے فیصلے سے چھوٹے دکانداروں اور کسانوں کا شدید نقصان ہوا ہے ۔انہیں نقدی کی سخت ضرورت تھی لیکن نقدی نہ ہونے کی وجہ سے انہیں مسلسل دقت ہورہی ہے۔ نوٹوں کی منسوخی سے سب سے زیادہ نقصان چھوٹے کاروباریوں، کسانوں، ماہی گیروں،دہاڑی مزدوروں اور گھر میں رہنے والی خواتین کو ہوا ہے ۔کانگریس کے نائب صدر نے کہا کہ یہ اصول ہے کہ ساری نقدی کالادھن نہیں ہوتی اور سارا کالادھن نقدی بھی نہیں سمجھا جاسکتا۔یہ حقائق پر مبنی اعدادوشمار ہے کہ صرف چھ فیصد کالادھن ہی نقدی میں ہوتا ہے ۔

اس کا استعمال سونے کی خرید،ریئل اسٹیٹ اور ڈالر کی خرید اور غیر ملکوں میں جمع کرانے کے لئے کیا جاتا ہے ۔انہو ں نے کہا کہ چھ فیصد کالے دھن کے نقدی میں ہونے کا مطلب ہے کہ 94فیصد کالادھن رئیل اسٹیٹ اور سونے وغیرہ کی خرید میں لگایا جاتا ہے۔ وزیراعظم بھی اس حقیقت سے واقف ہیں۔انہوں نے عام انتخابات میں کالادھن غیر ملکوں سے واپس لانے کا عوام سے وعدہ کیا تھا اور اسے لانے میں پوری طرح ناکام رہے ہیں اس لئے کالے دھن پر پابندی لگانے کے بہانے معیشت کو نقصان پہنچانے کا کام کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ آٹھ نومبر ک نوٹوں کی منسوخی کا فیصلہ کرکے وزیراعظم نے بے یقینی کا ماحول پیدا کرکے ملک کی نقدی معیشت کو چوپٹ کیا ہے ۔کالے دھن پر چوٹ کرنے کے بجائے انہوں نے معیشت کی بنیاد کو ہی کھود ڈالا ہے ۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے نوٹوں کی منسوخی کے فیصلے سے معیشت کو دھکا پہنچاہے لیکن حیرت کی بات یہ ہے کہ نوٹوں کی منسوخی کے ان کے فیصلے کی چیف اقتصادی مشیر کو بھی اطلاع نہیں دی گئی تھی۔دریں اثناء کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی کو نشانہ بناتے ہوئے انہیں ’’نااہل اور گھمنڈی‘‘ قرار دیا اور الزام لگایا کہ وہ اپنی شبیہہ کے لئے ٹی آر پی کی سیاست میں لگے رہتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم کی دلچسپی صرف اپنی شبیہ سدھارنے میں ہے اور ان کے گھمنڈ اور نااہلی کی وجہ سے ملک کے عوام شدید تکلیف میں ہیں۔انہوں نے کہا کہ کانگریس نے کبھی مودی کی طرح خود کی ’’شبیہ سدھارو‘‘ اور آئین میں بیٹھے لوگوں کے تجربوں کو درکنار کرنے والا وزیراعظم ملک کو نہیں دیا۔وزیراعظم کی پالیسی کی وجہ سے ملک کو نقصان ہورہا ہے وہ خود کو پیش کرنے میں مصروف ہیں۔

TOPPOPULARRECENT