Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / نریندر مودی نفرت پھیلارہے ہیں : سونیا گاندھی

نریندر مودی نفرت پھیلارہے ہیں : سونیا گاندھی

عوام کے اندر انتشار پیدا کرکے ناگپور سے فرقہ پرستانہ سیاست پر عمل ، آسام میں جلسہ سے صدر کانگریس کا خطاب

سروکھترے (آسام) /7 اپریل (سیاست نیوز) صدر کانگریس سونیا گاندھی نے آج وزیراعظم نریندر مودی پر الزام عائد کیا کہ وہ اپنے بیرونی دورہ کے دوران سلجھے ہوئے بیانات دیتے ہیں اور اندرون ملک نفرت پھیلاتے جارہے ہیں ۔ انہوں نے آسام کے رائے دہندوں کو خبردار کیا کہ وہ بی جے پی سے ہوشیار ہوجائیں کیوں کہ ناگپور سے فرقہ پرستانہ سیاست چلائی جارہی ہے ۔ بی جے پی کی کارکردگی پر ناگپور کا کنٹرول ہے ۔ صدر کانگریس سونیا گاندھی نے آسام کے ضلع بارپٹا میں زيرآسام ٹاؤن سروکھترے میں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مودی جی جب ودیش جاتے ہیں تو سب کو گلے لگاتے ہیں اور عوام کے بارے میں بڑی بڑی باتیں کرتے ہیں ۔ پردیش میں واپس آکر نفرت پھیلاتے ہیں ۔ اس طرح کی خطرناک فرقہ پرستی کو آسام میں بڑھاوا دینے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

بی جے پی یہاں فرقہ پرستی کا زہر پھیلارہی ہے اور سماج کو منقسم کررہی ہے ۔ یہ سرزمین برسوں سے پیار محبت ، امن اور بھائی چارہ کے اصولوں پر گامزن ہے ۔ آسام بھائی چارہ کے معاملہ میں ایک شاندار مثالی ریاست ہے ۔ یہاں کے عوام شنکر دیوا اور اذان فقیر کی تعلیمات پر عمل کرتے ہیں جبکہ مودی جی اور ان کے وزراء ریاست بھر کا دورہ کرتے ہوئے جھوٹے وعدے کررہے ہیں ۔ عوام میں پھوٹ ڈالنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کانگریس کے ترقیاتی منصوبہ میں ہمیشہ تمام مذاہب ، ذاتوں اور نسلوں کے عوام کو شامل کیا جاتا ہے اور اس نے تمام پارٹیوں کو اپنا ہمنوا بنایا ہے ۔ کانگریس جوڑنے کا کام کرتی ہے ۔ بی جے پی توڑنے کا ، سونیا گاندھی نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی کو دستور اور جمہوریت پر یقین نہیں ہے ۔ یہی اس بات کا ثبوت ہے کہ وہ آسام کی کانگریس حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ اروناچل پردیش اور اتراکھنڈ میں اس نے جمہوری طور پر منتخب حکومتوں کو بے دخل کردیا ہے ۔ وزیراعظم مودی اپنی زبان پر قابو پانا نہیں چاہتے ۔ اس لئے انہوں نے دستور کو بھی نشانہ بنایا ہے اور انہوں نے قومی روایات کو بھی فراموش کردیا ہے ۔ یہ لوگ گنگا جمنی تہذیب کو فراموش کررہے ہیں ۔ دستور پر نکتہ چینی کرنے میں کوئی کسر باقی نہیں رکھ رہے ہیں ۔ 15 سال میں آسام میں سکیورٹی عدم استحکام کی صورتحال پائی جاتی تھی اور تشدد کا بول بالا تھا ، چیف منسٹر ترون گوگوئی اور ان کے وزراء نے مل کر ریاست میں امن ترقی اور خوشحالی لانے کے لئے سخت محنت کی ہے ۔ یہ چیف منسٹر اور کانگریس کے ارکان کی محنت کا نتیجہ ہے کہ آسام میں ’’تبدیلی ‘‘ آرہی ہے ۔عوام گزشتہ 15 سال سے کانگریس حکومت کی کارکردگی کو محسوس کرچکے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT