Monday , August 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / نظام آباد میں کالج کی طالبہ کا اقدام خودکشی

نظام آباد میں کالج کی طالبہ کا اقدام خودکشی

حالت تشویشناک، حیدرآباد منتقلی ، طلبہ تنظیم کا دھرنا

نظام آباد: 16؍ مارچ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)شہر نظام آباد کے ایس آر جونیئر کالج کی ایک طالبہ نے کالج کی عمارت سے چھلانگ لگا کر خودکشی کرنے کی کوشش کی۔ جہاں اس کی حالت تشویشناک ہونے پر حیدرآباد منتقل کیا گیا۔ جب اس واقعہ کو انتظامیہ کی جانب سے اتفاقی حادثہ قرار دیا جارہا تو طلباء تنظیم اور سی پی آئی ایم کالج انتظامیہ کی جانب سے نشانات کے حصول کیلئے کئے جانے والے ہراساں اور تعلیمی دبائو کے بناء پر لڑکی خودکشی کیلئے مجبور ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے کالج کے روبرو دھرنا دیااور سی پی ایم کی جانب سے انتطامیہ کا علامتی پتلہ نذرآتش کیا گیا ۔ تفصیلات کے بموجب درپلی منڈل کے نلا ویلی کی ڈی الکھیاانٹرمیڈیٹ سال اول میں زیر تعلیم ہے ابھی ہاسٹل کی طالبہ ہے الکھیا صبح کی اولین ساعتوں میں عمارت پر سے چھلانگ لگاکر خودکشی کرنے کی کوشش کی ۔ ساتھی طالبات نے فوری انتظامیہ کو اطلاع دینے پر شدید زخمی حالت میں اسے خانگی ہاسپٹل منتقل کیا گیا جہاں اس کی حالت تشویشناک ہونے پر حیدرآباد منتقل کیا گیا ۔اطلاع کے ملتے ہی IIIٹائون پولیس یہاں پہنچ کر تحقیقات کا آغاز کیا ۔ الکھیا کے والد خلیج میں مقیم ہے جبکہ اس کی ماں جیوتی اس کی دختر رات بھر پڑھنے کی وجہ سے چکر کھاکر گرنے کی شکایت کررہی ہے ۔ جبکہ الکھیا کے ساتھیوں کا یہ بیان ہے کہ دو دنوں سے یہ خودکشی کرنے کا ارادہ ظاہر کررہی تھی جبکہ کالج کے ذمہ دار گوردھن ریڈی نے بتایا کہ برش کرنے کے دوران سڑھیوں سے گر کر زخمی ہوگئی ۔ اطلاع کے ملتے ہی طلباء تنطیموں نے یہاں پہنچ کر احتجاج کیا اور فرنیچر کو نقصان پہنچایا۔ حالات کشیدہ ہونے پر پولیس یہاں پہنچ کر ان طلباء کو گرفتار کرلیا ۔سی پی ایم سکریٹری دنڈی وینکٹی، سی پی ایم کے قائدین نورجہاں، گوردھن، کرشنا، سجاتا نے این ٹی آر چوراستہ پر راستہ روکو کیا اور کالج انتطامیہ کے علامتی پتلہ نذرآتش کیا ۔ انتظامیہ کی جانب سے طلباء کو نشانات کے حصول کیلئے دبائو ڈالنے کی وجہ سے ہی دبائو کو برداشت نہ کرتے ہوئے طالبہ نے خودکشی کرنے کی  کوشش کی ہے ۔ IIIٹائون پولیس اس خصوص میں مقدمہ درج کرتے ہوئے تحقیقات کرہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT