Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / نظام زکواۃ غربا کو بھی عید کی خوشیوں میں شامل کرنے کا ذریعہ

نظام زکواۃ غربا کو بھی عید کی خوشیوں میں شامل کرنے کا ذریعہ

دوماٹ منڈل میں جناب خداداد خاں کے تعاون سے زکواۃ کی تقسیم ۔ جناب فاروق حسین کاخطاب
حیدرآباد ۔ 21 ۔ جون : ( پریس نوٹ ) : زکواۃ اسلام کا ایک ایسا فرض ہے جو عید و تہواروں کے دوران امرا و غربا کے درمیان فرق کو ختم کرنے اور سب کو عید کی خوشیوں میں شامل کرنے کا موقع فراہم کرتا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے دوماٹ منڈل میں زکواۃ کی تقسیم کے موقع پر کیا جس کا سینئیر ٹی آر ایس لیڈر و ایم ایل سی مسٹر فاروق حسین نے اہتمام کروایا تھا ۔ مسٹر طالب خان ( دبئی ) نے اپنے ماما جناب خداداد خاں کے نمائندہ کے بطور شرکت کی جو ہر سال مستحقین میں زکواۃ کی امداد کی تقسیم کی غرض سے پابندی کے ساتھ ہندوستان کا دورہ کرتے تھے لیکن اس سال ضروری مصروفیت کی وجہ سے وہ شخصی طور پر شریک نہ ہوسکے لیکن فرض کی ادائیگی کیلئے بھانجہ کو یہاں روانہ کیا ہے ۔ تقریب میں ٹی آر ایس رکن اسمبلی مسٹر ایس رام لنگا ریڈی نے شرکت کی اور نظام زکواۃ کو مثالی اور دوسروں کیلئے مشعل راہ قرار دیا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک ایسا نظام ہے جو عید کی خوشیوں میں سب کو شامل کرتا ہے بھلے کوئی غریب کیوں نہ ہو کہ اس کے پاس عید منانے پیسے نہ ہوں مگر اس نظام کے ذریعہ وہ بھی عید مناتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ طریقہ کار آج سے 14 سو سال پہلے شروع ہوا جس پر عمل جاری ہے ۔ مسٹر فاروق حسین نے کہا کہ اسلام کی بنیاد پانچ چیزوں پر مشتمل ہے اس میں سے چوتھا زکواۃ ہے جو ہر صاحب استطاعت پر فرض ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پہلو تہی نہیں کی جاسکتی کیوں کہ کل روز محشر میں اس کی پوچھ ہونے والی ہے ۔ اگر کوئی استطاعت رکھ کر زکواۃ دینے میں کوتاہی کرتا ہے تو وہ گناہ گار ہے ۔ فاروق حسین نے کہا کہ جس مقصد کو لے کر ہم اس اہم ترین فرض کو ادا کررہے ہیں اس پر زکواۃ دینے اور لینے والوں کو سختی کے ساتھ عمل کرنا چاہئے اگر کوئی صاحب استطاعت ہونے باوجود زکواۃ لیتا ہے اور یہ سمجھتا ہے کہ اس کی آمدنی کے تعلق سے کسی کو جانکاری نہیں ہے مگر ان کو سمجھ لینا چاہئے کہ دنیا سے کوئی مطلب نہیں لیکن اللہ تو دیکھ رہا ہے اور ان سے حشر میں پوچھ ہوگی کہ تم کو مستحقین کا حق چھیننے کا کس نے حق دیا ہے ۔ انہوں نے جناب خدادا خاں کی خدمات کی ستائش کی جو مصروفیت کی وجہ سے دورہ کرنے سے قاصر رہے مگر ان کی اس فکر کو کیا کہیے کہ انہوں نے عید کی خوشیوں میں غریبوں کو شامل کرنے کی خاطر اپنے بھانجے کو یہاں روانہ کیا ۔ دوماٹ میں جملہ تین سو مستحق خواتین و بیوگان میں فی کس 3000 روپئے کے حساب سے زکواۃ کی تقسیم عمل میں آئی ۔ مسٹر طالب خان نے اپنے ماما کا پیام پڑھ کر سنایا اور تمام کو عید کی پیشگی مبارکباد ی ۔ اس موقع پر ہندو اور مسلم بھائیوں کی کثیر تعداد موجود تھی ۔

TOPPOPULARRECENT