Friday , July 21 2017
Home / Top Stories / نظر ثانی شدہ ایچ ون بی ویزوں کیلئے عاملہ کے حکم نامہ پر ٹرمپ کی دستخط

نظر ثانی شدہ ایچ ون بی ویزوں کیلئے عاملہ کے حکم نامہ پر ٹرمپ کی دستخط

ہرایرے غیرے نتھو خیرے کو ویزا نہیں ملے گا ، انتہائی ہنرمند اور سب سے زیادہ تنخواہ پانے والوں کو ترجیح

واشنگٹن۔ 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ اب ایک عاملہ کے حکم نامہ پر دستخط کرنے والے ہیں جس کے ذریعہ ایچ ون بی ویزا کے طریقہ کار کو نئی جیت حاصل ہوگی۔ یاد رہے کہ یہ ویزا ہندوستان آئی ٹی کمپنیوں اور پروفیشنلس میں بے حد مقبول ہے۔ اس ویزا پر نظرثانی کرتے ہوئے اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ ویزے انتہائی ہنرمند اور سب سے زیادہ تنخواہ حاصل کرنے والے درخواست گزاروں کو جاری کئے جائیں۔ ٹرمپ ملواکی (وسکانسن) کا دورہ کرنے والے ہیں جو ایوان نمائندگان کے اسپیکر پال ریان کا آبائی مقام ہے جہاں وہ (ٹرمپ) ’’بائے امریکن ہائر امریکن‘‘ کے نام سے نئے عاملہ کے حکم نامہ پر دستخط کریں گے۔ اس طرح اس ویزا کو صرف ان لوگوں کے لئے قابل دسترس بنایا جارہا ہے۔ جو اپنے متعلقہ شعبوں میں انتہائی ہنرمند ہوں اور ساتھ ہی ساتھ اہلیت کو بھی بنیاد بنایا گیا ہے۔ موٹے لفظوں میں ایچ ون بی ویزا اب ہر ایرے غیرنتھو خیرے کو جاری نہیں کیا جائے گا۔ عاملہ کے حکم نامہ پر اس وقت دستخط کئے جائیں گے جب یو ایس سٹیزن شپ اور امیگریشن سرویسیس یہ اعلان کرے گی کہ اس نے 199,000 درخواستوں کی قرعہ اندازی مکمل کرلی ہے جو 2018ء کے مالیاتی سال جس کا آغاز یکم اکتوبر سے ہوگا۔ قرعہ اندازی 20,000 ایچ ون بی ویزوں کے لئے ایسے درخواست گذاروں کے لئے کی گئی تھی جنہوں نے امریکی تعلیمی اداروں سے اعلیٰ تعلیم حاصل کی ہے۔ دوسری طرف وائیٹ ہاؤز کے ایک سینئر عہدیدار نےایچ ون بی  ویزوں کیلئے روایتی قرعہ اندازی کی مخالفت کرتے ہوئے اخباری نمائندوں سے کہا کہ ان ویزوں کے ذریعہ کمپنیاں کم تنخواہوں پر بیرونی ممالک کے ورکرس کو امریکہ لائیں گی اور اس طرح مقامی امریکی شہری محروم ہوجائیں گے۔ عہدیداروں کے مطابق ٹرمپ کی دستخط کے بعد امریکہ میں صرف اعلیٰ قابلیت رکھنے والے اور بہترین تنخواہ پانے والے ہی ایچ ون بی ویزے سے استفادہ کرسکیں، کیونکہ امریکہ میں داخلہ کے لئے تمام تحقیقاتی مراحل سے گزرنا ہوگا۔ دوسری طرف ڈپارٹمنٹ آف لیبر، جسٹس ؍ ہوم لینڈ سسکیورٹی کو بھی یہ ہدایت جاری کی گئی ہے کہ وہ دھوکہ دہی کرنے والوں پر خاص نظر رکھیں تاکہ امریکہ آنے والے ورکرس کے تحفظ کے علاوہ ان کی معاشی حالات کا بھی تحفظ کیا جاسکے، لہذا اگر یہ کہا جائے تو بے جا نہ ہوگا کہ ٹرمپ کی دستخط کے بعد ایچ ون بی ویزا اپنی ایک بالکل نئی شکل میں سامنے آئے گا۔ تنخواہوں کے چار زمرے مقرر کئے گئے ہیں، ان میں سے صرف 5 فیصد ورکرس ایسے ہیں جو سب سے زیادہ تنخواہ پانے والوں کے زمرے میں آتے ہیں، لہذا امریکی ورکرس (جو زیادہ تنخواہ پاتے ہیں) ان کی جگہ لینے کم تنخواہوں پر بیرون ملک سے ورکرس کو لایا جاتا تھا جو اب نہیں ہوگا۔ عہدیدار کے مطابق امریکی ایچ ون بی ویزا کے حصول کیلئے جن تین ہندوستانی کمپنیوں کے نام سرفہرست ہیں ان میں ٹاٹا (ٹی سی ایس)، انفوسیس اور کاگنیزنٹ شامل ہیں کیونکہ یہ کمپنیاں زائد تعداد میں ویزوں کی درخواست داخل کریں گی یعنی ان کی ضرورت سے بھی زیادہ تعداد اور اس طرح قرعہ اندازی میں ان کا قابل لحاظ حصہ تو نکل ہی آئے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT