Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / نعیم انکاونٹر : ایک معمہ جو حل ہونے سے پہلے رہ گیا !

نعیم انکاونٹر : ایک معمہ جو حل ہونے سے پہلے رہ گیا !

حیدرآباد ۔ 10 ۔ اگست : ( سیاست نیوز ) : گینگسٹر نعیم الدین کی پولیس کے ہاتھوں ہلاکت کے بعد صحافتی اور عوامی حلقوں میں کئی ایک سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔ سب سے اہم سوال یہ ہے کہ نکسلائٹس کو ٹھکانے لگانے میں نعیم الدین کا استعمال کرنے والی پولیس آخر اسے اپنے راستے سے ہٹانے پر مجبور کیوں ہوئی ؟ اگر نعیم کو پولیس کے اعلیٰ عہدیداروں کی مدد حاصل رہی تو کیا نعیم کی سرگرمیوں و معاملت میں ان کا بھی حصہ رہا ؟ نکسلائٹس کے صفائے میں مدد پر پولیس نے نعیم کو کونسی مراعات دیں جس کا فائدہ اٹھا کر اس نے جرائم کی ایک الگ دنیا بسالی ایک ایسی دنیا جہاں صرف اور صرف نعیم کا ہی سکہ چلتا تھا ۔ ایک اور سوال یہ بھی گردش کررہا ہے کہ خود کو پیشہ وارانہ طور پر مہارت کی حامل سمجھنے والی پولیس کو کیا یہ پتہ نہیں تھا کہ نعیم الدین کے پاس بے تحاشہ دولت کہاں سے آرہی ہے ؟ اس نے کن سیاستدانوں ، صنعتکاروں اور تاجرین سے زبردستی رقومات اینٹھی ہیں ۔ جہاں تک نعیم کے جرم کی دنیا پر چھا جانے کا سوال ہے وہ اپنی سرگرمیوں کی انجام دہی میں کافی احتیاط برتتا تھا لیکن اپنے سایہ پر بھروسہ نہ کرنے والے گینگسٹر نعیم کو پولیس کے چند اعلیٰ عہدیداروں پر بہت زیادہ بھروسہ تھا ۔ پولیس سیاسی قائدین اور صحافیوں کے تعاون سے دیکھتے ہی دیکھتے نعیم ’ڈان ‘ بن گیا اور جرائم کی دنیا میں بھائی صاحب کے نام سے شہرت حاصل کی اور مختصر عرصہ میں ہزاروں کروڑ جائیدادوں کا مالک بن گیا ۔

پولیس کے چھوٹے سے اعلیٰ عہدیداروں کو مہنگے تحائف ، کار ، بنگلہ ، فارم ہاوز قیمتی اراضیات پیش کرتے ہوئے اپنی جرائم کی دنیا کو دیکھتے ہی دیکھتے کئی ریاستوں تک توسیع دے دی ۔ بھونگیر نعیم کے انکاونٹر کے بعد اس کے قبضے سے برآمد ہونے والی ڈائری سے کئی انکشافات منظر عام پر آرہے ہیں اور نعیم کا راست و بالراست ساتھ دینے والوں کی نیندیں حرام ہوگئی ہیں ۔ ابتدائی تحقیقات میں ہی کروڑہا روپئے کے ساتھ ساتھ ہزاروں کروڑہا روپئے کی اراضیات ، اثاثہ جات سے متعلق دستاویزات ، قیمتی ہیرے ، سونا اور چاندی کے زیورات برآمد ہونے کی اطلاعات وصول ہورہی ہیں ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ عوام کے محافظ رہنے والے محکمہ پولیس کے چند عہدیداروں نے نکسلائٹس کا صفایا کرنے اور اپنے مالی مفادات کی تکمیل کے لیے بھونگیر نعیم کی خدمات سے استفادہ کیا جرائم کی دنیا کا اس کو بے تاج بادشاہ بنادیا ۔ نکسلائٹس کو ٹھکانے لگانے میں پولیس کی مدد کرنے والے نعیم اراضیات کے تنازعات میں شامل ہوگیا اور پولیس کے تعاون کا بھر پور فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنی غیر قانونی سرگرمیوں کو نہ صرف جاری رکھا بلکہ اس کو توسیع دینے کے چکر میں اپنی جان گنوا بیٹھا۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ سرکل انسپکٹر ، ڈی ایس پی ، ایس پی ، ڈی آئی جی اور آئی جی سطح کے پولیس عہدیداروں سے گینگسٹر نعیم کے تعلقات تھے جن میں 8 تا 10 ایسے عہدیدار ہیں جن سے نعیم کے اچھے تعلقات تھے ۔ یہ بھی سنا جارہا ہے کہ پولیس کے چند اعلیٰ عہدیداروں نے نعیم کی اطلاعات پر ہی نکسلائٹس کا انکاونٹر کرتے ہوئے ترقی اور ایوارڈس حاصل کیے ہیں ۔

محکمہ پولیس میں اپنی جان پہچان کا بھر پور فائدہ اٹھاتے ہوئے نعیم نے حیدرآباد کے بشمول اضلاع رنگاریڈی ، نلگنڈہ ، میدک وغیرہ میں اراضیات کے تنازعات کی یکسوئی کی اور آمدنی میں 25 فیصد حصہ تعاون کرنے والے عہدیداروں میں تقسیم کیا ۔ نعیم کی دستیاب ڈائری سے اور بھی کئی معلومات حاصل ہوئی ہیں جن میں 63 صحافیوں کا بھی نام شامل ہے ۔ جرائم کی دنیا کو توسیع دینے کے لیے نعیم نے ہتھیار ڈالنے والے سابق نکسلائٹس کو اپنی گینگ میں شامل کیا ہے ۔ نکسلائٹس کو ٹھکانے لگانے اور دوسری غیر قانونی سرگرمیوں کو انجام دینے کے لیے ان کی خدمات سے استفادہ کیا ہے ۔ یہ بات بھی منظر عام پر آرہی ہے کہ غیر قانونی سرگرمیوں میں ساتھ دینے والے پولیس کے اعلیٰ عہدیداروں کو نعیم نے حیدرآباد کے مضافاتی علاقوں میں کئی ایکڑ قیمتی اراضی ، بڑے بڑے کامپلکس ، فلیٹس اور پلاٹس کے ساتھ ساتھ فارم ہاوز اور گارڈنس وغیرہ بطور تحفہ پیش کئے ہیں ۔ ذرائع ابلاغ خاص کر تلگو میڈیا کے ذریعہ منظر عام پر آئی رپورٹس میں بتایا گیا کہ پولیس کے کئی عہدیداروں کو نعیم پارٹیاں دیا کرتا تھا ۔ اپنے حریفوں کے خاتمہ کے لیے نعیم کی خدمات سے استفادہ کرنے والی پولیس نے اچانک نعیم کا انکاونٹر کیوں کیا؟ اس پر تجسس برقرار ہے ۔ کیا پولیس کا جو ٹارگیٹ تھا وہ مکمل ہوگیا ؟ یا نعیم اعلیٰ پولیس عہدیداروں کے لیے وبال جان بن گیا تھا ؟ یا نعیم پولیس کو بھی خاطر میں نہیں لارہا تھا ؟ جس کی وجہ سے پولیس نے نعیم کا انکاونٹر کردیا ۔ پولیس کی تحقیقات میں ہی حقائق منظر عام پر آنے کی امید ہے ۔ مگر کیا تحقیقات کرنے والی پولیس اپنے محکمہ کی نعیم کو پشت پناہی پر سے پردہ اٹھائے گی ۔ یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا ۔۔

TOPPOPULARRECENT