Sunday , June 25 2017
Home / Top Stories / نفرت پر مبنی جرائم سے نمٹنے کے لیے نئے قانون کا وعدہ

نفرت پر مبنی جرائم سے نمٹنے کے لیے نئے قانون کا وعدہ

LUCKNOW, FEB 8 (UNI) Congress leaders Ghulam Nabi Azad, Raj Babbar, Sheela Dixshit, Salman Khurshid and others releasing Congress Manifesto for the Uttar Pradesh Assembly elections at party office in Lucknow on Wednesday.UNI PHOTO-36U

طالبات کو مفت سائیکل، گیہوں 3 اور چاول 2 روپئے کیلو، اترپردیش میں ایس پی سے اتحاد تاریخی لمحہ ، کانگریس کا انتخابی منشور جاری

لکھنو۔8 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج اترپردیش اسمبلی انتخابات کے سلسلہ میں انتخابی منشور جاری کیا جس میں نفرت پر مبنی جرائم کی روک تھام کے لیے نیا قانون متعارف کرنے کا وعدہ کیا گیا۔ ایسے جرائم میں ملوث رہنے والوں کو سخت سزائیں یقینی بنائی جائیں گی جو ذات پات اور مذہب کی بنیاد پر کشیدگی پیدا کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ خواتین، او بی سی اور اقلیتوں کو بھی مراعات کا وعدہ کیا گیا ہے۔ 12 صفحات پر مشتمل انتخابی منشور میں بی جے پی کی مخالف غریب اور مخالف عوام پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا گیا کہ تخریبی طاقتوں نے سارے ملک میں افراتفری کا عالم پیدا کردیا ہے۔ ایسی طاقتوں سے نمٹنے کے لیے دو بڑی جماعتوں کانگریس اور سماج وادی پارٹی نے اتحاد کیا ہے۔ کانگریس نے اس اتحاد کو ملک کی سیاست کی تاریخ کا اہم لمحہ قرار دیا۔ انتخابی منشور میں کہا گیا ہے کہ بی جے پی کا نفرت اور تخریبی سرگرمیوں پر مبنی ایجنڈہ ہر انتخابات کے ساتھ مزید واضح طور پر سامنے آرہا ہے۔ نفرت پر مبنی جرائم سے نمٹنے کے لیے نیا قانون متعارف کرنے کا وعدہ کیا گیا جس کے ذریعہ ذات پات، مساوات اور مذہب کی بنیاد پر کشیدگی پیدا کرنے والوں کو سخت سزاء دی جائے گی۔ پولیس مظالم کے واقعات کی روک تھام کے لیے موثر لائحہ عمل اختیار کرنے کا بھی وعدہ کیا گیا۔ پارٹی نے کہا کہ خواتین کے تحفظ کے لیے پیشرو یو پی اے حکومت نے جو قانون منظور کیا اس پر موثر عمل آوری یقینی بنائے جائے گی۔ خواتین کے خلاف جرائم اور مظالم میں ملوث رہنے والوں کو سخت سزاء دی جائے گی۔ اس کے علاوہ پارٹی نے ’’کنیا سنشکتی کرن یوجنا‘‘ شروع کرنے کا بھی اعلان کیا جس کے ذریعہ ہر لڑکی کو جب وہ 18 سال کی ہوجائے 50 ہزار تا ایک لاکھ روپئے کی رقم یقینی طور پر فراہم کی جائے گی

اس کے علاوہ اعلی تعلیم حاصل کرنے والی لڑکیوں کو اسکالرشپ بھی دی جائے گی۔ کانگریس پارٹی نے پنچایت انتخابات میں خواتین کو 50 فیصد تحفظات کا وعدہ کیا۔ اترپردیش کانگریس کمیٹی کے صدر راج ببر نے انتخابی منشور جاری کرتے ہوئے پسماندہ طبقات کا تحفظ یقینی بنانے اور ساتھ ہی ساتھ دلتوں کو بہتر روزگار اور تعلیم کے مواقع فراہم کرنے کا بھی وعدہ کیا۔ انتخابی منشور میں انفراسٹرکچر کو ترقی دینے کے ساتھ ساتھ غذائی سلامتی کو یقینی بنانے کا بھی وعدہ کیا گیا جس کے تحت گیہوں اور چاول بالترتیب 3 روپئے اور 2 روپئے فی کیلو سربراہ کئے جائیں گے۔ مڈ ڈے میل اسکیم کے تحت تغذیہ بخش غذا فراہم کی جائیگی ۔ کسانوں کو قرضہ جات معاف کرنے بی جے پی کے انتخابی وعدے کے جواب میں کانگریس نے ’’قرضہ معاف، بجلی ہاف‘‘ کا وعدہ کیا اور کہا کہ کسانوں کو خاطر خواہ فوائد یقینی بنائے جائیں گے۔ کسانوں کی پیداوار کے تحفظ کے لیے عصری گودام اور کولڈ اسٹوریج کے علاوہ ایگرو پراسسنگ انڈسٹریز کو فروغ دیا جائے گا۔ ہر لڑکی کو مفت اسکولی تعلیم فراہم کی جائے گی اور 9  ویں تا 12 ویں جماعت کی طالبات کو مفت سائیکل دی جائے گی۔ روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے لیے اسکل ڈیولپمنٹ سنٹرس قائم کیئے جائیں گے اور اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ کم از کم 50 لاکھ مفرد و خواتین  کو آئندہ 5 سال کے دوران روزگار فراہم ہوگا۔ راج ببر نے کہا کہ ایس سی ایس ٹی، او بی سی اور دیگر طبقات کو مفت قانونی امداد فراہم کی جائے گی اور دلتوں کے خلاف جرائم کے مقدمات میں معاونت کے لیے سرکشا متر کا تقرر کیا جائے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT