Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / نمک اور شکر کی قلت کی افواہ ، شہری پریشان

نمک اور شکر کی قلت کی افواہ ، شہری پریشان

دن میں نوٹوں کیلئے رات میں نمک کیلئے قطار، فی کیلو 500 روپئے میں فروخت

حیدرآباد /11 نومبر ( سیاست نیوز ) مرکزی حکومت نے یہ واضح کردیا کہ ملک میں نمک کی کوئی قلت نہیں ہے اور عوام کو اس شئے کی خریدی کیلئے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ نمک کی قلت کی افواہوں کا بازار گرم ہوتے ہی شہر حیدرآباد کے کئی محلوں میں لوگوں کو بحران و پریشان دیکھا گیا ۔ پرانے شہر کے تالاب کٹہ ، چندرائن گٹہ اور بارکس کے علاوہ نئے شہر کے کئی محلوں میں بھی عوام کو دوکانات پر طویل قطار میں نمک کی خریداری کرتے ہوئے دیکھا گیا ۔ نمک کے علاوہ شکر کی قلتکی افواہیں بھی گشت کرتی رہیں ۔ لوگوں سے یہ فقرے کستے ہوئے بھی سنا گیا کہ مودی حکومت میں عام آدمی کو در در کی ٹھوکریں کھانے کیلئے مجبور کردیا گیا ہے ۔ ہر روز بحران پیدا کرنے والی خبروں اور اقدامات  سے پریشان کن کیفیت پیدا کردی گئی ہے ۔ واضح رہے کہ سابق اٹل بہاری واجپائی کی زیر قیادت بی جے پی حکومت پیاز اور نمک کی قلت کی وجہ سے گر گئی تھی ۔ عوام کے ذہنوں میں 1999 عشرے کے واقعات دوبارہ تازہ ہوگئے ۔ وزیر اعظم مودی نے حال ہی میں بڑے قدر کی نوٹوں کو منسوخ کرنے کا اعلان کیا تھا ۔ اس کے بعد عوام میں افرا تفری پھیلی ہوئی ہے ۔  لوگ دن میں نوٹوں کیلئے اور رات میں نمک حاصل کرنے طویل قطار بنا رہے ہیں ۔ شہر میں نمک فی کیلو گرام 100 روپئے تا 250 روپئے میں خریدنے کی بھی افواہیں گشت کرنی لگی ہیں ۔ حکومت نے بتایا کہ 22 ضروری اشیاء روزانہ کی اساس پر کڑی نظر رکھتے ہوئے مارکٹ میں سربراہ کی جاتی ہیں ۔ ملک کے کئی حصوں میں نمک کی خریدی کیلئے عوام میں بے چینی اور افراتفری کی اطلاعات کے بعد مرکزی حکومت نے وضاحتی بیان جاری کیا ۔ بعض مقامات پر 500 روپئے فی کیلو گرام نمک فروخت ہونے کی بھی اطلاع ہے ۔ محکمہ امور صارفین نے واضح کیا کہ ملک میں نمک کی کوئی کمی نہیں ہے ۔ ملک میں نمک کی جملہ پیداوار تقریباً 220 لاکھ ٹن ہے ۔ اس میں سے صرف 60 لاکھ ٹن نمک اندرون ملک استعمال ہوتا ہے ۔ ماباقی نمک صنعتی استعمال کیلئے یا برآمد کیا جارہا ہے ۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں رات دیر گئے تک بچے ، بوڑھے ، مرد و خواتین کو ہاتھوں میں تھیلیاں لئے ہوئے نمک اور شکر کے حصول کیلئے اِدھر اُدھر سرگرداں دیکھا گیا ۔ کئی افراد نے عجلت میں دکانداروں کی منہ مانگی قیمت پر بھی نمک خریدا ۔ بتایا جاتا ہے کہ نمک اور شکر کا ذخیرہ کرنے والوں نے اس موقع سے فائدہ اٹھاکر من مانی قیمت وصول کی ہے ۔ اسی دوران ڈپٹی کمشنر پولیس ساؤتھ زون وی ستیہ نارائنا نے نمک کی قلت کی افواہوں پر دھیان نہ دینے کی عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ پرانے شہر میں بعض عناصر اپنے فائدہ کے خاطر لوگوں میں افواہ گشت کرواکر کالا بازاری میں ملوث ہیں ۔ عوام ایسے کالا بازاریوں کے جھانسے میں نہ آئیں ۔

TOPPOPULARRECENT