Wednesday , September 20 2017
Home / پاکستان / نواز شریف اور دو بیٹے قومی احتساب بیورو کے اجلاس پر حاضر نہ ہوسکے

نواز شریف اور دو بیٹے قومی احتساب بیورو کے اجلاس پر حاضر نہ ہوسکے

سمن کی عدم وصولی کا دعویٰ، آئندہ سماعت میں نواز شریف کے اقامہ پر پوچھ گچھ متوقع

لاہور ۔ 18 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے معزول وزیراعظم نواز شریف اور ان کے دو بیٹے سرکردہ انسداد رشوت ستانی ادارہ میں آج حاضری دینے میں ناکام ہوگئے۔ پناما دستاویزات میں انکشاف کئے گئے رشوت ستانی اور رقمی ہیرپھیر کے الزامات پر قومی احتساب بیورو ان تینوں سے پوچھ گچھ کرنا چاہتا تھا۔ سپریم کورٹ کی پانچ رکنی بنچنے 28 جولائی کو اپنے ایک سخت فیصلہ کے ذریعہ نواز شریف کو متحدہ عرب امارات میں ان کے بیٹے کی ایک کمپنی میں ورک پرمٹ (ملازمت کا اقامہ) رکھنے کا الزام ثابت ہونے پر پاکستان میںکسی بھی عوامی عہدہ پر فائز رہنے کیلئے نااہل قرار دیا تھا۔ عدالت عظمیٰ نے قومی احتساب بیورو (نیب) کو شریف، ان کے دو بیٹوں اور داماد صفدر کے علاوہ نواز شریف کے ایک اور رشتہ دار اور وزیرفینانس اسحق ڈار کے خلاف الزامات پر مشترمہ تحقیقاتی کمیشن کی رپورٹ کی روشنی میں مزید تحقیقات کرنے کا حکم دیا تھا، جس پر تعمیل کرتے ہوئے نیب نے نواز شریف اور ان کے دو بیٹوں حسین اور حسن کے خلاف حاضری کیلئے سمن جاری کیا تھا۔ پناما دستاویزات نے گذشتہ سال شریف خاندان کے سمندر پار اثاثوں کا انکشاف کیا تھا اور احتساب بیورو ان تینوں سے لاہور میں واقع اپنے دفتر میں آج پوچھ گچھ کرنا چاہتا تھا۔ بیورو کے ایک عہدیدار نے کہا کہ شریف اور ان کے بیٹوں کی آج حاضری متوقع تھی لیکن شریف کے دفتر نے مطلع کیا کہ وہ حاضر نہیں ہورہے ہیںلیکن ان کی غیرحاضری کی کوئی وجہ نہیں بتائی گئی۔ عہدیدار نے کہاکہ اندرون دو ہفتے ان تینوں کو دوسرا سمن جاری کیاجائے۔ تاہم شریف خاندان سے قریبی تعلق رکھنے والے ایک لیڈر نے سمن موصول ہونے کی تردید کی۔ پاکستانی پیپلز پارٹی کے سنیٹر پرویز رشید نے کہا کہ ’’نواز شریف اور ان کے بیٹوں کو نیب کے سمن موصول نہیںہوئے تھے۔ سمن موصول ہونے کے بعد ہی شریف اور بیورو کے اجلاس پر حاضر ہونے یا نہ ہونے کے بارے میں کوئی فیصلہ کریں گے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT