Wednesday , September 20 2017
Home / کھیل کی خبریں / نواز شریف ہند۔ پاک کرکٹ روابط کے حامی

نواز شریف ہند۔ پاک کرکٹ روابط کے حامی

پاکستانی وزیراعظم کا وزیر داخلہ چودھری نثار کی مخالفت کے باوجود مثبت موقف ۔ پڑوسی ملکوں کے باہمی تعلقات میں بہتری کا انتظار
اسلام آباد ۔18 نومبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیراعظم نواز شریف چاہتے ہیں کہ پاکستان اور ہندوستان کے درمیان کرکٹ کھیلی جائے ، حالانکہ دونوں پڑوسیوں کے درمیان موجودہ طورپر کشیدگی کا ماحول ہے ، وزیراعظم کے قریبی مددگار نے یہ بات کہی ۔ اخبار دی نیشن نے اس مددگار کے حوالے سے کہا کہ نواز شریف کرکٹ کے پرجوش شائق ہیں ۔ دونوں ملکوں کے درمیان سیریز کے خلاف فیصلہ کرنا کبھی بھی اُن کے لئے ترجیحی اقدام نہیں ہوگا۔ انھوں نے کہاکہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو ہندوستان کے ساتھ سیریز کیلئے حصول اجازت کیلئے پابند کرنا محض اس لئے ہے کیونکہ ہندوستان کی طرف سے کوئی مثبت اشارے نہیں مل رہے ہیں ۔ شیوسینا نفرت کا ماحول پیدا کررہی ہے اور نواز شریف کو کھلاڑیوں کی حفاظت کی فکر ہے ۔ انھوں نے کہا کہ نواز شریف پاکستان ۔ انڈیا کرکٹ کی پرزور وکالت کرتے ہیں جیسا کہ سرحد کی دونوں جانب کروڑہا شائقین کا معاملہ ہے ۔ نواز شریف کو اُمید ہیکہ ہندوستان کے ساتھ تعلقات میں بہتری آئے گی جس کے بعد کرکٹ منعقد کی جاسکے گی نہ کہ جنگ ۔ وزیراعظم کے مددگار نے کہا ،

 

’’ہاں ، موجودہ طورپر سیاسی کشیدگی کا ماحول ہے لیکن ہم نے ایسا کبھی نہیں چاہا ۔ کھیل کو کھیل کی طرح دیکھنا چاہئے ۔ ہمیں اُمید ہے ، ہم اس مسئلے کی یکسوئی میں کامیاب ہوجائیں گے ‘‘۔ تاہم پاکستان کے وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان موجودہ حالات میں ہندوستان کے ساتھ کھیلنے کے سخت مخالف ہیں۔ انھوں نے گزشتہ روز کہا تھا کہ وہ پاکستانی ٹیم کے دورۂ ہند کی مخالفت کریں گے کیونکہ نئی دہلی حکومت نے عملاً شیوسینا کی انتہاپسندی کی تائیدو حمایت کر رکھی ہے ۔ پاکستان اور ہندوستان نے ممبئی 2008 ء کے دہشت گردانہ حملوں کے بعد سے کوئی مکمل سیریز نہیں کھیلی ہے جبکہ ان حملوں کے تعلق سے ہندوستان کا کہنا ہے کہ وہ سرحدپار موجود عسکریت پسندوں کی کارستانی ہے ۔ دونوں ملکوں کے درمیان حساس رشتہ کو دیکھتے ہوئے کسی بھی سیریز کے انعقاد سے قبل حکومت کی جانب سے تازہ این او سی درکار رہے گا ۔ اس دوران پاکستان کرکٹ بورڈ کی ایکزیکٹیو کمیٹی کے چیرمین نجم سیٹھی نے بھی چودھری نثار کے موقف کی تائید کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ بورڈ کو مشورہ دیں گے کہ بی سی سی آئی کی یہ پیشکش قبول نہ کی جائے کہ پاکستانی ٹیم ہندوستان میں سیریز کھیلے۔ اتفاق کی بات ہے کہ سیٹھی اُس وقت بورڈ کے چیرمین تھے جب پی سی بی اور بی سی سی آئی نے 2015 ء اور 2023 ء کے درمیان چھ باہمی سیریز کھیلنے کی یادداشت مفاہمت پر دستخط کئے تھے ، جس کے تحت پہلی سیریز ڈسمبر میں متحدہ عرب امارات میں ہونا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT