Saturday , October 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / نوجوان انوراگ ٹھاکر اتفاق رائے سے بی سی سی آئی کے صدر منتخب

نوجوان انوراگ ٹھاکر اتفاق رائے سے بی سی سی آئی کے صدر منتخب

ایسٹ زون کی تمام چھ یونٹوں کی تئید ۔ اجئے شرکے کرکٹ بورڈ کے نئے سکریٹری ہونگے ۔ خصوصی جنرل باڈی اجلاس میںانتخاب

ممبئی 22 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) انوراگ ٹھاکر کو آج کرکٹ کنٹرول بورڈ ( بی سی سی آئی ) کا دوسرا سب سے کم عمر صدر اتفاق رائے سے منتخب کرلیا گیا جبکہ اجئے شرکے کو بی سی سی آئی کا سکریٹری منتخب کرلیا گیا ہے ۔ بی سی سی آئی میں یہ تبدیلیاں پرسکون انداز میں ایسے وقت میں عمل میں آئی ہیں جبکہ بورڈ قانونی مسائل سے دو چار ہے ۔ 41 سالہ انوراگ ٹھاکر بی سی سی آئی صدر کی حیثیت میں سشانک منوہر کے جانشین ہونگے جنہوں نے آئی سی سی کے صدر نشین کی حیثیت سے ذمہ داری سنبھالنے اس عہدہ سے استعفی پیش کردیا تھا ۔ مہاراشٹرا کرکٹ اسوسی ایشن کے سربراہ و کارپوریٹ تاجر اجئے شرکے توقع کے مطابق بی سی سی آئی کے سکریٹری منتخب ہوگئے ہیں۔ یہ عہدہ انوراگ ٹھاکر کے پاس تھا جنہوں نے کل اس سے استعفی پیش کردیاتھا ۔ سینئر بی سی سی آئی نائب صدر سی کے کھنہ نے آج بورڈ کی خصوصی جنرل باڈی میٹنگ کی صدارت کی اور صدر کیلئے ٹھاکر کے انتخاب کا اعلان کیا ۔ سشانک منوہر صرف سات ماہ قبل بی سی سی آئی کے صدر منتخب ہوئے تھے اور ان کی علیحدگی کی وجہ سے یہ انتخاب ضروری ہوا تھا ۔ سکریٹری کی حیثیت سے کل اپنے استعفی کے فوری بعد انوراگ ٹھاکر نے اپنے صدارتی امیدواری کے دستاویز پر ایسٹ زون کی تمام چھ یونٹوں کے دستخط حاصل کرلئے تھے جس کے نتیجہ میں ان کے اس عہدہ کیلئے اتفاق رائے سے انتخاب کی راہ ہموار ہوگئی تھی ۔ وہ بی سی سی آئی کے 34 ویں صدر ہونگے ۔ کل اظہار یگانگت کے طور پر ایسٹ زون کی تمام چھ یونٹوں کرکٹ اسوسی ایشن آف بنگال ‘ آسام کرکٹ اسوسی ایشن ‘ تریپورہ کرکٹ اسوسی ایشن ‘ این سیا سی اور جھارکھنڈ اسٹیٹ کرکٹ اسوسی ایشن نے ان کے دستاویز نامزدگی پر دستخط کردئے تھے ۔

کسی بھی امیدوار کی نامزدگی کیلئے صرف ایک اسوسی ایشن کی تائید ضروری ہوتی ہے ۔ اس بار ایسٹ زون سے صدر کی تائید ضروری تھی ۔ انوراگ ٹھاکر ہماچل پردیش میں ہمیر پور کے بی جے پی رکن پاریمنٹ ہیں اور انہوںنے مشکل حالات میں بی سی سی آئی کی صدارت کی ذمہ داری حاصل کی ہے ۔ بورڈ کو فی الحال سپریم کورٹ کی برہمی کا سامنا ہے اور عدالت چاہتی ہے کہ بورڈ میں اصلاحات کیلئے جسٹس آر ایم لودھا کمیٹی کی سفارشات پر عمل آوری کی جائے ۔ انوراگ ٹھاکر کو یہ بھی اعزاز ہے کہ وہ فرسٹ کلاس کرکٹ کھیل چکے ہیں۔ اس سے قبل فرسٹ کلاس کرکٹ کھیل کر بی سی سی آئی صدر کا عہدہ حاصل کرنے والے پہلے فرد راج سنگھ ڈونگر پور تھے جنہوں نے 1998 -99 میں اس عہدہ سے علیحدگی اختیار کی تھی ۔

حجالانکہ درمیان میں کرکٹ اسٹار سنیل گواسکر نے یہ عہدہ سابق ٹسٹ کرکٹر شیولال یادو کے ساتھ یہ عہدہ سنبھالا تھا اور انہیں خاص طور پر آئی پی ایل امور کی ذمہ داری تھی تاہم یہ کام سپریم کورٹ کی ہدایت پر کیا گیا تھا جب عدالت نے اس وقت کے صدر این سرینواسن کو ہدایت دی تھی کہ آئی پی ایل بیٹنگ و اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں وہ عہدہ سے مستعفی ہوجائیں۔ راج سنگھ ڈونگر پور نے راجستھان کیلئے 86 فرسٹ کلاس میچس کھیلے تھے جبکہ انوراگ ٹھاکرنے رانجی ٹرافی کیلے صرف ایک میچ میں رائیٹ ہینڈ بیٹسمن کی حیثیت سے ہماچل پردیش کی نمائندگی کی تھی ۔ ٹھاکر ایسے تیسرے فرد بھی ہیں جو ایسٹ زون کی تائید سے اس عہدہ کیلئے منتخب ہوئے ہیں۔ جگموہن ڈالمیا کا سرینواسن کی علیحدگی کے بعد اتفاق رائے سے صدر کی حیثیت سے انتخاب ہوا تھا تاہم وہ گذشتہ سال انتقال کرگئے تھے ۔ اسکے بعد سشانک منوہر نے اکٹوبر 2015 میں یہ عہدہ سنبھالا تھا ۔ انوراگ ٹھاکر ایک سیاستدان بھی ہیں جو بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ ہیں۔ ان کیلئے بی سی سی آئی کی صدارت پھولوں کی سیج نہیں ہے کیونکہ بورڈ کو تشکیل جدید کے مسئلہ سپریم کورٹ کی برہمی کا سامنا ہے ۔ امکان ہے کہ انوراگ ٹھاکر ستمبر 2017 تک بورڈ کے صدر رہیں گے ۔ انوراگ ٹھاکر ہماچل پردیش کے دو مرتبہ کے چیف منسٹر پریم کمار دھومل کے فرزند ہیں اور امید کی جا رہی ہے کہ وہ اپنے سیاسی تجربہ و پس منظر کو بورڈ میں حالات کو بہتر بنانے کیلئے بروئے کار لائیں گے ۔ ٹھاکر کے تمام کرکٹرس اور سینئر کرکٹرس سے روابط بھی بہترین ہیں۔

TOPPOPULARRECENT