Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / نوجوان لڑکے و لڑکیوں کی پارکوں میں غیر اخلاقی حرکات پر پابندی ناگزیر

نوجوان لڑکے و لڑکیوں کی پارکوں میں غیر اخلاقی حرکات پر پابندی ناگزیر

کل ہند مرکزی رحمت عالم کمیٹی کا اجلاس ، ڈاکٹر محمد عبدالنعیم قادری اور دیگرکا خطاب
حیدرآباد ۔ 11 ۔ مئی : ( راست ) : کل ہند مرکزی رحمت عالم کمیٹی کے زیر اہتمام علماء و دانشوران ملت کا ایک ہنگامی اجلاس بعنوان دورِحاضر میں نوجوان نسل کو بے راہ روی سے روکنا اور اصلاح معاشرہ پر 10/ مئی بمقام قادریہ اسلامک سنٹر ، دبیر پورہ ، حیدرآباد منعقد ہوا ۔ اجلاس کا آغاز حافظ شیخ حسین قادری ملتانی کی قرات سے ہوا ۔ مولانا اقبال احمد رضوی القادری نے اجلا س سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دین اسلام اللہ تعالیٰ کا پسندیدہ اور پاکیزہ دین ہے جو عین فطرت انسانی پر ہے ۔ اس پیارے دین نے حقوق انسانیت کی پاسداری کی ہے ۔ مردوں کے حقوق مقرر ہوئے تو عورتوں کے بھی حقوق اسلام کی نورانی کرنوں نے عیاں کردئیے ۔ اسلام سے پہلے عورتوں کی عزت و حرمت کا کوئی تصور نہ تھا یہی عورت تھی جس کو اسلام سے پہلے زندہ دفن کردیا جاتا تھا ۔ نکاح اور طلاق کا صحیح نظام نہ ہونے کی وجہ سے ایک مرد جتنی عورتیں چاہتا رکھتا تھا ۔ عورت بے حقیقت شئے تھی ۔ اسلام نے عورت کی عزت و عظمت کیلئے ایک قانون عطا کیا ۔ مولانا نادر المسدوسی نے کہا کہ موجودہ دور میں لڑکے و لڑکیوں کا اختلاط قوم مسلم کیلئے لمحہ فکر ہے ۔

آج حیدرآباد کے تمام پارکس مسلم لڑکیوں و خواتین سے بھرے پڑے ہیں ۔ لڑکے و لڑکیاں پارکوں و دیگر مقامات پر بے حیائی کے مناظر پیش کررہے ہیں ۔امام وخطیب حضرات کی اہم ذمہ داری ہے کہ وہ نمازِ جمعہ کے موقع پر اپنے خطبات میں نوجوان لڑکے و لڑکیوں کو زنا کے عذابات سے آگاہ کریں ۔جناب محمد شوکت علی صوفی کہا کہ عصر حاضر کی ٹکنالوجی جہاں پر نوجوان نسل کو ترقی کی راہ پر لے جارہی ہے وہیں پر اُنہیں بربادی اور تباہی کی طرف بھی ڈھکیل رہی ہے لڑکے و لڑکیاں مغربی تہذیب کی چکاچوند سے متاثر ہوکر اپنی زندگیوں کو تباہ و برباد کررہے ہیں ، ویسٹرن کلچر کے نام پر شرم و حیاء کو ختم کیا جارہا ہے ۔ جناب مرزا نثار احمد بیگ نظامی نے کہا کہ آج مسلم معاشرہ کیلئے یہ ایک اہم امر ہے کہ وہ اپنی آنے والی نسلوں کی حفاظت کریں ۔ یہود و نصاریٰ کلچر کے نام پر مسلم معاشرہ کو تباہ کررہے ہیں ۔گھروں میں تلاوت قرآن ، نمازوں کی پابندی ، اور اسلامی تعلیمات کے ذریعہ لڑکیوں کو اپنے گھر کو اسلامی گہوارہ بنانے کی تعلیم دیں ۔ ڈاکٹر محمد عبدالنعیم قادری نظامی نے کہا کہ حیدرآباد دکن کی عظیم اسلامی یونیورسٹی جامعہ نظامیہ نے فتویٰ دیا ہے کہ کو ایجوکیشن اسکول وکالجس میں لڑکے و لڑکیوں کا ایک ساتھ تعلیم حاصل کرنا حرام ہے ۔

محمد شاہد اقبال قادری ( صدر رحمت عالم کمیٹی ) نے کہا کہ آج نوجوان نسل سوشیل میڈیا ،انٹرنیٹ ، فیس بک ، واٹس اپ کے ذریعہ کئی ایک غیر اخلاقی حرکات میں مبتلا ہورہے ہیں ، ٹیلی ویژن اور انٹرنیٹ پر دستیاب غیر اخلاقی مواد نوجوان نسل کو تباہ و برباد کررہا ہے ۔کل ہند مرکزی رحمت عالم کمیٹی مرکزی حکومت و ریاستی حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ خواتین و لڑکیوں کو بھی پارکوں میں جانے سے روکنے کیلئے ایک E-Team بنائی جائے جس میں پارکوں وغیرہ میں غیر اخلاقی حرکت کرنے والے لڑکے و لڑکیوں کے والدین کو بلاکر اُن کے سامنے اُنہیں سزا دی جائے ۔ والدین و سرپرستوں کو بھی تنبیہ کی جائے کہ وہ اپنے لڑکے و لڑکیوں کے موبائیل فون و انٹرنیٹ کی جانچ کریں کہ وہ کہیں غیر اخلاقی و غیر اسلامی چیزوں میں مبتلا تو نہیں ہیں جو والدین کا اہم فریضہ ہے ورنہ روزِ حشر والدین بھی عذابات الہٰیہ کے حقدار ہونگے ۔ کیونکہ والدین کا اپنی اولاد کو بہترین عطیہ اچھی دینی تعلیم و تربیت ہے ۔

حیدرآباد ۔ 11 ۔ مئی : ( راست ) :

TOPPOPULARRECENT