Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / نوجوت سنگھ سدھو راجیہ سبھا سے مستعفی ، بی جے پی کو دھکہ

نوجوت سنگھ سدھو راجیہ سبھا سے مستعفی ، بی جے پی کو دھکہ

اروند کجریوال نے ستائش کی ،عام آدمی پارٹی میں شمولیت کی قیاس آرائی
نئی دہلی ۔ 18 جولائی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کو پنجاب میں آج زبردست دھکہ پہونچا جب کہ نوجوت سنگھ سدھو نے راجیہ سبھا سے استعفیٰ دیدیا ، حالانکہ مودی حکومت نے اُنھیں تین ماہ قبل ہی نامزد کیا تھا۔ عام آدمی پارٹی نے یہ اشارہ دیا ہے کہ سدھو کو آئندہ سال اسمبلی انتخابات میں پارٹی کااہم چہرہ ہوں گے ۔ 52 سالہ سدھو جنھیں 22 اپریل کو راجیہ سبھا کیلئے نامزد کیا گیاتھا ، آج استعفیٰ دیا جسے صدرنشین حامد انصاری نے فوری اثر کے ساتھ قبول کرلیا۔ انھوں نے مختصر بیان دیتے ہوئے یہ اشارہ دیا کہ بی جے پی میں اُن کے ساتھ سب کچھ ٹھیک نہیں ۔ اس وقت سیاسی حلقوں میں یہ قیاس آرائیاں جاری ہیں کہ انتخابات سے قبل وہ عام آدمی پارٹی میں شامل ہوسکتے ہیں۔ چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال اور اُن کی پارٹی کے سرکردہ قائدین نے سدھو کے فیصلہ کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ پنجاب میں کرپشن کے خلاف انھوں نے جرأت مندانہ قدم اُٹھایا ہے ۔ اروند کجریوال جو اس وقت پنجاب کے دورہ پر ہیں ٹوئٹ کیا کہ لوگ راجیہ سبھا نشست کیلئے کچھ بھی کرنے تیار ہوجاتے ہیں ، لیکن ایسا بہت کم دیکھا جاتا ہے کہ کسی راجیہ سبھا رکن نے اپنی ریاست کو بچانے کیلئے استعفیٰ دیا ہو ۔ وہ سدھو جی کے اس حوصلہ کو سلام کرتے ہیں۔ عام آدمی پارٹی کے اعلیٰ ذرائع نے کہاکہ سدھو اندرون چند یوم پارٹی میں شامل ہوجائیں گے ۔ یہ بھی قیاس کیا جارہا ہے کہ انھیں ریاست میں عام آدمی پارٹی چیف منسٹر امیدوار کے طورپر پیش کیا جائے گا ۔ استعفیٰ کے بعد سدھو نے مختصر بیان میں کہاکہ پارٹی میں اُن کے ساتھ سب کچھ ٹھیک نہیں، تاہم انھوں نے مستقبل کے منصوبوں کا انکشاف نہیں کیا۔ پہلے بھی یہ اشارے مل رہے تھے کہ ریاست میں پارٹی اُمور سے وہ خوش نہیں۔ سدھو نے کہاکہ وزیراعظم کی ایماء پر اُنھوں نے پنجاب کی بہبود کیلئے راجیہ سبھا کی نامزدگی قبول کی تھی ۔ پنجاب کیلئے تمام راستے بند کردینے کے بعد اب یہ مقصد باقی نہیں رہا ، لہذا اُن کیلئے یہ ایک بوجھ بن چکا ہے اور وہ اس بوجھ کو مزید سنبھالنا نہیں چاہتے۔

TOPPOPULARRECENT