Wednesday , April 26 2017
Home / ہندوستان / نوٹو ں کی منسوخی سے متعلق عرضیاں آئینی بنچ کے سپرد

نوٹو ں کی منسوخی سے متعلق عرضیاں آئینی بنچ کے سپرد

نئی دہلی۔16دسمبر(سیاست ڈاٹ کام)سپریم کورٹ نے پانچ سو اور ایک ہزار روپے کے پرانے نوٹوں کے استعمال کی مدت بڑھانے کا حکم دینے سے انکار کرتے ہوئے نوٹوں کی منسوخی کے مرکزی حکومت کے فیصلے کی آئینی حیثیت کو چیلنج دینے والی عرضیوں کو پانچ رکنی آئینی بنچ کو سپرد کرنے کا آج فیصلہ لیا۔چیف جسٹس ٹی ایس ٹھاکر کی صدارت والی بنچ نے اپنے عبوری حکم میں کہا کہ نوٹوں کی منسوخی کے سلسلے میں مرکزی حکومت کے آٹھ نومبر کے فیصلے کی آئینی حیثیت کے سوال پر پانچ رکنی آئینی بنچ فیصلہ کرے گی۔آئینی بنچ ان نو نکات پر غور کرے گی،جنہیں سپریم کورٹ نے گزشتہ سماعت کے دوران تیار کیا تھا۔سپریم کورٹ نے کہا ک ملک کے مختلف ہائی کورٹ میں نوٹوں کی منسوخی سے متعلق عرضیوں کی سماعت پر پابندی رہے گی۔عدالت نے مرکزی حکومت سو بھی کہا کہ وہ فی ہفتہ بچت بینک کھاتوں سے نقد نکالنے (24ہزار روپے )کے اپنے وعدے پر عمل کرے ۔عدالت نے 500 اور 1000روپے کے نوٹوں کو جمع کرانے کی آخری تاریخ (30دسمبر)کو آگے بڑھانے کا فیصلہ مرکزی حکومت پر چھوڑ دیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT