Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / نوٹ بندی سے آر ٹی سی کو 10 کروڑ کا نقصان

نوٹ بندی سے آر ٹی سی کو 10 کروڑ کا نقصان

عوام کا سفر ملتوی ، چلر کے مسائل ، عوام کی آمد و رفت متاثر
حیدرآباد ۔ 24 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ آر ٹی سی کو بڑی نوٹوں کی منسوخی سے 10 کروڑ روپئے کا نقصان ہوا ہے اور روزانہ 60 تا 70 لاکھ روپئے کا نقصان درج کیا جارہا ہے ۔ ریاست کی تقسیم کے بعد حکومت کے تعاون سے کارپوریشن ابھی ابھی اپنے نقصانات سے باہر نکل ہی رہا تھا کہ بڑی نوٹوں کی منسوخی سے اس کو بہت بڑا جھٹکا لگا ہے ۔ مرکزی حکومت کی راحت سے آر ٹی سی نے اپنے بسوں میں سفر کرنے والے مسافرین سے 24 نومبر تک منسوخ شدہ نوٹ قبول کئے ہیں ۔ جس سے کسی حد تک مزید نقصان سے دوچار ہونے سے آر ٹی سی محفوظ رہا ہے ۔ مگر بڑی نوٹوں کی منسوخی سے عوام چلر سے محروم ہوگئے ہیں ۔ جس کی زد میں آر ٹی سی بھی ہے ۔ اگر منسوخ شدہ نوٹوں کو قبول کرنے کی حد میں مزید توسیع نہیں دی گئی تو آر ٹی سی کے نقصانات اور بھی زیادہ بڑھ سکتے ہیں ۔ پلے ویلگو بسوں میں ایک مقام سے دوسرے مقام کو پہونچنے کے لیے 5 تا 50 روپئے کا ٹکٹ ہوتا ہے ۔ دور دراز علاقوں کو استثنیٰ بھی دے دیا گیا تو اضلاع میں گھومنے پھرنے کے لیے 100 روپئے سے کم اخراجات ہوتے ہیں بنکوں اور پوسٹ آفسوں میں2000 روپئے کی نوٹ دی جارہی ہے چلر کی قلت کی وجہ سے عوام اپنے سفر کو بھی ملتوی کرچکے ہیں ۔ جس کی وجہ سے آر ٹی سی کی آمدنی گھٹ گئی ہے ۔ یہ شادیوں کا سیزن ہے ۔ ہر سال اس سیزن میں آر ٹی سی کی آمدنی میں اضافہ ہوتا ہے تاہم نوٹ بندی کے باعث 15 دن میں آر ٹی سی کو 10 کروڑ روپئے کا نقصان ہوا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT