Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / نوٹ بندی سے ’ زندہ تو زندہ مردے ‘ بھی پریشان

نوٹ بندی سے ’ زندہ تو زندہ مردے ‘ بھی پریشان

لاوارث مسلم نعشوں کی تجہیز و تکفین بھی متاثر
حیدرآباد ۔ 26 ۔ دسمبر : ( نمائندہ خصوصی) : وزیراعظم نریندر مودی نے 8 نومبر کو جو نوٹ بندی نافذ کی ہے اس نے سارے ملک میں ہلچل پیدا کردی ہے ۔ سماج کا ہر طبقہ اس نوٹ بندی سے شدید متاثر ہوا ہے ۔ گذشتہ 47 دنوں سے نوٹ بندی کے نتیجہ میں کم از کم 130 مرد و خواتین فوت ہوچکے ہیں ۔ حد تو یہ ہے کہ بنکوں کے باہر قطاروں میں کھڑی خواتین بچوں کو جنم دے رہی ہیں ۔ مودی نے اگرچہ عوام سے اچھے دن کا وعدہ کرتے ہوئے اقتدار حاصل کیا لیکن گذشتہ ڈھائی برسوں میں عوام کا کچھ بھلا نہیں ہوا ۔ ہاں صرف چند دولت مند صنعت کاروں ، تاجرین اور حکمران جماعت کے قائدین کا فائدہ ہوا ۔ نوٹ بندی نے جہاں زندوں کو پریشان کر رکھا ہے وہیں مردے بھی اس سے پریشان ہیں ۔ عوام کو تدفین اور آخری رسومات میں کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ مثال کے طور پر سیاست ملت فنڈ کی جانب سے لاوارث مسلم نعشوں کی جو تجہیز و تکفین کا انتظام کیا جاتا ہے نوٹ بندی نے اسے بھی متاثر کردیا ہے ۔ مودی کے حکم کی تعمیل میں ریزرو بینک آف انڈیا نے عوام کو بینکوں سے ہر ہفتہ زیادہ سے زیادہ 24 ہزار روپئے نکالنے کی اجازت دی جب کہ صرف ایک لاوارث مسلم نعش کی تجہیز و تکفین پر تین ہزار روپئے کے مصارف آتے ہیں ۔ بعض وقت ایک ہی دن میں 10 تا 15 میتوں کی تدفین عمل میں لانی پڑتی ہے اگر فی میت 3000 روپئے کا حساب لگایا جائے تو اس کے لیے 30 تا 45 ہزار روپئے درکار ہوتے ہیں ۔ 20 دسمبر کو 7 لاوارث مسلم نعشوں کی تدفین عمل میں لائی گئی جس پر 21 ہزار روپئے کے مصارف آئے ۔ بینکوں سے پیسے نکالنے کی حد مقرر کیے جانے کے نتیجہ میں کئی لاوارث نعشیں عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کے مردہ خانہ میں پڑی ہوئی ہیں ۔ ان نعشوں کی تدفین کے لیے ایک ایک ہفتہ انتظار کرنا پڑرہا ہے ۔ نوٹ بندی نے حالات اس قدر ابتر کردئیے ہیں کہ لوگ اب یہ کہنے لگے ہیں کہ مودی نے زندوں کو تو دور مردوں کو بھی پریشان کر رکھا ہے ۔ آپ کو بتادیں کہ روزنامہ سیاست نے سال 2003 سے لاوارث مسلم نعشوں کی تدفین کا سلسلہ شروع کیا اور تاحال سیاست ملت فنڈ کے ذریعہ 4000 سے زائد لاوارث مسلم نعشوں کی تدفین عمل میں لائی ۔ سیاست کے ایک قاری نے بالکل درست کہا ہے ’ ایک تو لاوارث مسلم نعشوں کی تدفین کے لیے اراضی ناکافی ہے ۔ وقف بورڈ اراضی نہیں دیتا اور مودی ( نوٹ بندی کے ذریعہ ) پیسہ نہیں دیتا ‘ ۔ نوٹ بندی سے صرف لاوارث مسلم نعشوں کی تدفین پر ہی اثر نہیں پڑا بلکہ بیمار بھی شدید متاثر ہوئے ہیں ۔ نوٹ بندی سے متاثرہ ایک شخص نے مودی کے فیصلہ پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ مودی جی ایسے وزیراعظم ہیں جنہوں نے مردوں کو پریشان کرنے کا بھی منفرد اعزاز حاصل کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT