Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / نوٹ بندی کے باعث معاشی سست روی کا دعوی مسترد

نوٹ بندی کے باعث معاشی سست روی کا دعوی مسترد

نئی دہلی۔9 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) نوٹ بندی کی وجہ سے معاشی سست روی پر تشویش کو مستردکرتے ہوئے وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہا کہ اپریل تا ڈسمبر کے دوران راست اور بالواسطہ ٹیکس کلکشن میں کافی اضافہ ہوا ہے۔ اس سے صاف اشارہ ملتا ہے کہ معاشی سرگرمی بشمول مینوفیکچرنگ شعبہ کی کارکردگی بہتر انداز میں جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپریل تا ڈسمبر 2016ء میں ٹیکس وصولی 5.53 لاکھ کروڑ روپئے ہوئی جو گزشتہ سال اسی مدت کے مقابلہ 12.01 فیصد زیادہ ہے۔ اسی طرح بالواسطہ ٹیکس وصولی میں بھی 25 فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور یہ 6.30 لاکھ کروڑ روپئے رہے۔ انہوں نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ اکسائز وصولی میں 43 فیصد اضافہ ہوا اور یہ 2.79 لاکھ روپئے کروڑ روپئے رہے۔ اسی طرح سرویس ٹیکس کی شکل میں 1.83 لاکھ کروڑ روپئے وصول ہوئے جو 23.9 فیصد زیادہ ہے۔ انہوں نے جاری مالی سال کے ابتدائی 9 ماہ کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ کسٹمس ڈیوٹی کی وصولی بھی 1.67 لاکھ کروڑ روپئے رہی اور یہ 4.1 فیصد زیادہ ہے۔ ارون جیٹلی نے کہا کہ اس ماہ کے دوران جب نوٹ بندی کا عمل جاری تھا اکسائز وصولی میں 31.6 فیصد اضافہ ہوا۔ انہوں نے کہا کہ یہ زمرہ راست مینو فیکچرنگ شعبہ سے مربوط ہے۔ ماہ ڈسمبر میں سرویس ٹیکس وصولی میں بھی 12.4 فیصد اضافہ ہوا۔ کسٹمس آمدنی میں 6.3 فیصد کمی ہوئی کیوں کہ سونے کی درآمد گھٹ گئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT