Wednesday , April 26 2017
Home / Top Stories / نوٹ بندی کے باوجود 8 فیصد شرح ترقی کا نشانہ

نوٹ بندی کے باوجود 8 فیصد شرح ترقی کا نشانہ

تمام ہندوستانیوں کو توانائی فراہم کرنے کا عہد، وزیر تیل پردھان کا خطاب

بوسٹن 4 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) وزیر تیل اور قدرتی گیس دھرمیندر پردھان نے کہا ہے کہ ہندوستان کی معیشت نوٹ بندی کے باوجود اپنی رفتار جاری رکھے گی اور آئندہ سال 8 فیصد شرح ترقی حاصل کرے گی۔ پردھان نے گزشتہ روز یہاں 2017 ء مساچوسٹس انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی انرجی کانفرنس میں کلیدی خطبہ دیتے ہوئے کہاکہ گزشتہ نومبر ہم نے ہماری 85 فیصد زیر گشت کرنسی کا چلن واپس لے لیا اور اُس کے بعد بھی ہندوستان کی مجموعی دیسی پیداوار (جی ڈی پی) بدستور آگے بڑھ رہی ہے۔ تازہ اعداد و شمار کے مطابق ستمبر تا ڈسمبر سہ ماہی کے دوران شرح ترقی 7 فیصد درج کی گئی۔ پردھان نے اعتماد ظاہر کیاکہ ہندوستان رواں سال 7 فیصد کی مجموعی شرح ترقی سے تجاوز کرتے ہوئے آئندہ سال 8 فیصد شرح ترقی حاصل کرلے گا۔ ’’اقتدار کا توازن : توانائی کا بدلتا نمونہ‘‘ کے زیرعنوان ایم آئی ٹی کانفرنس میں اسٹوڈنٹس، فیکلٹی، توانائی کے ماہرین اور دیگر ماہرین سے خطاب کرتے ہوئے پردھان نے نشاندہی کی کہ نریندر مودی حکومت آب و ہوا کے معاملہ میں انصاف سے جڑا توانائی کا انصاف چاہتی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ ہندوستان میں ہم توانائی کی نئی کہانی رقم کرنا چاہتے ہیں۔ اہم توانائی کے معاملہ میں انصاف سے کام لینے کیلئے پابند عہد ہیں۔ ہمارا رویہ معقولیت پسند رہا ہے اور وزیراعظم مودی کے ویژن کو بڑھاوا دینے کے مقصد سے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ پردھان دو روزہ دورۂ بوسٹن پر ہیں۔ اُنھوں نے ہاورڈ یونیورسٹی کے کنیڈی اسکول آف گورنمنٹ کے طلبہ سے بھی خطاب کیا۔ مصروفیت سے بھرپور دن میں اُنھوں نے شہر کے اعلیٰ عہدیداروں اور توانائی کے ماہرین کے ساتھ بات چیت منعقد کی۔ اِن میں سابق امریکی وزیر توانائی اور ایم آئی ٹی سے وابستہ موجودہ پروفیسر ایرنیسٹ مونیز اور ہاورڈ کے پروفیسر ہینری لی شامل ہیں۔ پردھان نے ایم آئی ٹی انرجی لیاب کا دورہ بھی کیا اور اسٹوڈنٹس و محققین کی جانب سے کئے جارہے تحقیقی کاموں کا مشاہدہ کیا۔ اِن اسٹوڈنٹس اور ریسرچرس میں کئی ہندوستانی نژاد ہیں۔ وہ اگلے مرحلہ کے لئے ہوسٹن جارہے ہیں۔ ایم آئی ٹی کانفرنس سے خطاب میں پردھان نے کہاکہ عالمی حدت حقیقی مسئلہ ہے اور ہندوستان میں ہنوز اِس کے لاکھوں شہریوں کو توانائی تک رسائی دستیاب نہیں ہے۔ ملک نے اپنے تمام شہریوں کو توانائی فراہم کرنے کا عزم کر رکھا ہے اور یہ کام پائیدار انداز میں کیا جائے گا۔
اُنھوں نے کہاکہ ہندوستان کوئلے پر انحصار جاری رکھے گا تاہم بتدریج گیس اور قابل تجدید توانائی کے ذرائع بھی اپنائے جائیں گے۔ اُنھوں نے کہاکہ ہندوستان آب و ہوا میں بگاڑ پیدا کرنے سے گریز کرنے پر یقین رکھتا ہے اور ماحولیات کو نقصان پہنچائے بغیر ترقی کرے گا۔ پردھان نے کہاکہ کوئلہ ہندوستان کو 60 فیصد توانائی فراہم کرتا ہے اور کوئلے پر انحصار جاری رہے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT