Monday , October 23 2017
Home / شہر کی خبریں / نوٹ بندی کے بعد دو لاکھ کمپنیوں کی لین دین پر نظر

نوٹ بندی کے بعد دو لاکھ کمپنیوں کی لین دین پر نظر

کالا دھن کو سفید میں تبدیلی کا شک ، بینکوں سے تفصیلات کی طلبی ، مرکز سے کارروائی متوقع
حیدرآباد ۔ 6 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : نوٹ بندی کے بعد مرکزی حکومت نے ایک اندازہ کے مطابق تقریباً 2 لاکھ کمپنیوں کی لین دین پر نظریں مرکوز کرچکی ہے ۔ ان میں سے بیشتر کمپنیوں پر کالا دھن کو سفید بنانے کی سرگرمیوں میں ملوث رہنے کا شک ہے ۔ ہندوستان کے مختلف بنکوں نے نوٹ بندی کے بعد کمپنیوں کی لین دین کی تمام تفصیلات مرکزی حکومت کو پیش کردی ہے ۔ ذرائع کے بموجب 13 بینکوں نے تقریبا 5800 ( ڈمی ) غیر کارکرد کمپنیوں کا مکمل ڈاٹا جس میں بڑے پیمانے پر لین دین کی ہے ، کو بھی واضح انداز میں پیش کیا ہے ۔ پہلے مرحلے میں 13140 اکاونٹس کا جائزہ لیا گیا ہے ۔ کئی کمپنیوں کی جانب سے تقریبا 100 سے زائد اکاونٹس کو نوٹ بندی کے بعد اچانک استعمال کرنے کی نشاندہی کی گئی ہے ۔ واضح رہے کہ گذشتہ سال 8 نومبر کو وزیراعظم نریندر مودی نے اچانک 500 اور 1000 روپئے کی بڑی نوٹوں کو منسوخ کرنے کا اعلان کردیا تھا ۔ جس کے بعد کئی کمپنیوں کے اکاونٹس میں جو لین دین ہوئی ہے وہ مشکوک پائی گئی ہے ۔ کئی کمپنیاں ایسے ہیں جن کے نوٹ بندی سے قبل اکاونٹ زیرو بیالنس تھے ۔ لیکن نوٹ بندی کے بعد ان کمپنیوں کے اکاونٹس میں اچانک 4574 کروڑ روپئے ڈپازٹ کردئیے گئے یہی نہیں ان کمپنیوں نے اپنے اکاونٹس سے دوبارہ 4552 کروڑ روپئے نکال بھی لئیے ہیں ۔ جس کا گہرائی سے جائزہ لیا جارہا ہے ۔ مرکزی حکومت نے مشکوک اکاونٹس کی رقمی لین دین کی تحقیقات کرانے کے احکامات جاری کردئیے گئے ۔۔

TOPPOPULARRECENT