Friday , June 23 2017
Home / شہر کی خبریں / نو مولود بچوں کو بروقت دودھ کی فراہمی پر حکومت کی توجہ

نو مولود بچوں کو بروقت دودھ کی فراہمی پر حکومت کی توجہ

نیلوفر ہاسپٹل میں منفرد طرز کے ’ ملک بینک ‘ کا قیام
حیدرآباد۔3مئی (سیاست نیوز) نومولود بچوں کو دودھ کی فوری فراہمی کے لئے ریاستی سطح پر شہر حیدرآباد میں نیلوفر ہاسپٹل میں منفرد طرز کا پہلا ’ملک بینک‘ قائم کیا جائے گا اور اس کا افتتاح 30مئی کو عمل میں آئے گا۔ ریاستی وزیر صحت ڈاکٹر سی لکشما ریڈی نے یہ بات بتائی۔ قبل از وقت پیدا ہونے والے بچوں کو فوری ماں کا دودھ نہ ملنے کے سبب اب تک دواخانہ کے انتظامیہ کی جانب سے متبادل کا انتظام کیا جاتا تھا لیکن اب ملک کے دیگر علاقوں کی طرح ریاست تلنگانہ میں بھی ماں کے دودھ کے بینک قائم کئے جائیں گے اور پہلا ’ملک بینک‘ نیلوفر ہاسپٹل میں قائم کیا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں فی الحال 15ملک بینک کام کر رہے ہیں اور تلنگانہ میں اب دھتری نامی غیر سرکاری تنظیم نے اس سلسلہ میں پیشرفت کرتے ہوئے نیلوفر ہاسپٹل میں ’ملک بینک‘ قائم کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے جسے حکومت کی جانب سے منظوری دیدی گئی ہے ۔بتایا جاتاہے کہ دواخانہ میں شریک خواتین کے علاوہ وہ خواتین جو اضافی دودھ کے سبب پریشان ہیں ان کے دودھ کو اس ملک بینک میں جمع کیا جائے گا اور اس ملک بینک میں جمع دودھ کو ان بچوں کے استعمال کے لئے فراہم کیا جائے گا جو نیلوفر ہاسپٹل کے سخت نگہداشت والے کمروں میں زیر علاج ہیں۔ دھتری نامی غیر سرکاری تنظیم کے مطابق ملک بینک کے قیام کا مقصد ان نومولود بچوں کی غذا کا انتظام کرنا ہے جو قبل از وقت پیداہوتے ہیں اور انہیں آئی سی یو میں رکھا جاتا ہے ۔ علاوہ ازیں ان ملک بینک کے ذریعہ ان بچوں کی نگہداشت بھی ممکن ہو پائے گی جن کی مائیں کسی وجہ سے دودھ پلانے کی متحمل نہیں ہیں۔ ریاستی وزیر صحت ڈاکٹر سی لکشما ریڈی نے دھتری کے ذمہ داروں کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی سہولت کی فراہمی سے نہ صرف بچوں کو معیاری غذا کی فراہمی ممکن ہو سکے گی بلکہ بینک میں دودھ کے ذخیرہ کی موجودگی معصوم بچوں کو غذا کے نام پر متبادل کے استعمال کروانے کے لئے ڈاکٹرس مجبور نہیں ہوں گے۔ اب تک ڈاکٹر س کی جانب سے ان نومولود بچوں کو دودھ کے پوڈر سے تیار کیا جانے والا دودھ بطور غذا فراہم کیا جاتا تھا لیکن 30مئی کے بعد نیلوفر ہاسپٹل میں زیر علاج قبل از وقت پیدا ہونے والے بچوں کو جو آئی سی یومیں ہوتے ہیں انہیں پوڈر کا دودھ نہیں بلکہ دیگر ماؤوں سے حاصل کردہ اضافی دودھ مل پائے گا جو کہ بچہ کی صحت کے کافی فائدہ مند ثابت ہونے کا امکان ہے۔ بتایاجاتا ہے کہ اس سہولت کے نیلوفر ہاسپٹل میں آغاز کے بعد جائزہ لیا جائے گا اور بعد ازاں اسے دیگر دواخانوں تک وسعت دینے کے متعلق غور کیا جائے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT