Wednesday , July 26 2017
Home / ہندوستان / نکسل باری مسئلہ پر بی جے پی کی احتجاجی ریالیاں

نکسل باری مسئلہ پر بی جے پی کی احتجاجی ریالیاں

کولکتہ 4 مئی (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج مغربی بنگال کے مختلف حصوں میں احتجاج منظم کرتے ہوئے ترنمول کانگریس کو نکسل باری قبائیلی جوڑے کا اغواء کرنے اور اُنھیں ٹی ایم سی میں شامل کرنے کے لئے مجبور کرنے کا مورد الزام ٹھہرایا۔ یہ وہی جوڑا ہے جس نے صدر بی جے پی امیت شاہ کی اُن کے حالیہ دورہ مغربی بنگال کے دوران میزبانی کی تھی۔ بھارتیہ جنتا یووا مورچہ اور بی جے پی کے کارکنوں نے کولکتہ، نکسل باری، سیلیگوڑی اور شمالی و جنوبی چوبیس پرگنہ اضلاع میں احتجاجی ریالیوں اور جلسوں کا اہتمام کیا۔ اُنھوں نے الزام عائد کیاکہ ٹی ایم سی نے مہالی جوڑے کا اغواء کیا جس نے بی جے پی سربراہ کی گزشتہ 25 اپریل کو شمالی بنگال کے اِس علاقہ کو اُن کے دورے پر لنچ سے ضیافت کی تھی۔ بی جے پی نے یہ بھی الزام لگایا کہ شوہر اور بیوی دونوں کو ٹی ایم سی میں شامل ہونے پر مجبور کیا گیا۔ تاہم اِس الزام کو خود اِس جوڑے (راجو مہالی اور گیتا) نے مسترد کردیا۔ اِس مسئلہ پر بی جے پی اور ٹی ایم سی کے درمیان لفظی جنگ چھڑچکی ہے جیسا کہ مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے اِسے انتقامی سیاست کا روایتی معاملہ قرار دیا جس پر ٹی ایم سی نے سخت ردعمل میں پرساد کو اپنے منصب کے وقار کو برقرار رکھنے کی تاکید کردی۔ مغربی بنگال میں بی جے پی کی طاقت کو وسعت دینے کی کوشش میں امیت شاہ نے گزشتہ ہفتہ چیف منسٹر ممتا بنرجی کے حلقہ اسمبلی بھوانی پور کے ایک سلم علاقہ کا دورہ کیا تھا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT