Monday , May 22 2017
Home / Top Stories / نکی ہیلی اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیر، ٹرمپ کا اہم فیصلہ

نکی ہیلی اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیر، ٹرمپ کا اہم فیصلہ

مٹ رومنی امکانی وزیر خارجہ ، نئے انتظامیہ کے ذمہ دار کے انتخاب تیزی ، اہم تقررات کا جلد اعلان متوقع

واشنگٹن۔ 23 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) جنوبی کیرولینا کی ہندوستانی نژاد امریکی خاتون گورنر نکی ہیلی نے نومنتخبہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی اس پیشکش کو قبول کرلیا ہے جہاں انہیں (نکی) اقوام متحدہ میں امریکی سفیر کا عہدہ پیش کیا گیا ہے۔ امریکہ کے ایک موقر روزنامہ میں آج اس خبر کو شہ سرخیوں کے ساتھ شائع کیا گیا ہے۔ ٹرمپ کے مشیران کے ذریعہ ہی غوروخوض کے بعد آج باقاعدہ طور پر اس کا اعلان کیا جائے گا۔ ٹرمپ نے آج پہلی خاتون کی تقرری کی ہے جو کابینی سطح کے عہدہ کے مماثل ہے۔ پوسٹ اینڈ کوریئر نے 44 سالہ ہیلی کی تقرری کی سب سے پہلے اطلاع دی جنہیں ری پبلیکن پارٹی کا ایک ابھرتا ہوا ستارہ تصور کیا جارہا ہے۔ یاد رہے کہ نکی ہیلی کے والدین ہندوستانی تارکین وطن تھے۔ نکی ہیلی کی ترقی کا یہ سفر صرف 6 سال قبل شروع ہوا تھا جو اس وقت بمبرگ میں سکونت پذیر تھیں اور انہیں جنوبی کیرولینا کی پہلی خاتون اور اقلیتی گورنر کی حیثیت سے منتحب کیا گیا تھا۔ فی الحال وہ اپنے عہدہ کی دوسری میعاد پوری کررہی ہیں۔ بحیثیت گورنر انہوں نے تجارت اور لیبر معاملات پر اپنی بیش بہا خدمات انجام دیں۔ بہرحال اس کے باوجود بھی ان کے پاس خارجہ پالیسی وضع کرنے کا کوئی وسیع تجربہ نہیں رہا اور کئی بار ایسا بھی ہوا کہ امریکی افواج اور قومی سلامتی کے معاملے پر ان کے نظریات کو ری پبلیکن پارٹی میں ہی اہمیت کا حامل نہیں سمجھا گیا۔ پوسٹ اور کوریئر کے مطابق 2011ء میں گورنر کے عہدہ پر فائز ہونے کے بعد نکی ہیلی نے اب تک بیرونی ممالک کے آٹھ دورے کئے ہیں جن میں جرمنی کا دورہ بھی شامل ہے۔

یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہے کہ ٹرمپ ٹاور میں گزشتہ ہفتہ نکی ہیلی نے نومنتخبہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے ملاقات کی تھی کیونکہ اس وقت نیویارک میں واقع ٹرمپ ٹاور میں نومنتخبہ صدر اہم شخصیتوں سے ملاقات کررہے تھے۔اگر نکی ہیلی کا انتخاب عمل میں آگیا تو اس طرح وہ ٹرمپ انتظامیہ میں شامل ہونے والی پہلی اقلیتی خاتون بن جائیں گی اور موجودہ سفیر سامنتا پاور کی جگہ لیں گی۔ علاوہ ازیں نکی ہیلی کے لئے ایک اور اعزاز یہ ہوگا کہ وہ امریکہ کے کسی بھی انتظامیہ کی کابینی درجہ کی حامل سب سے پہلی ہندوستانی نژاد امریکی بن جائیں گی۔ بہرحال اس عہدہ کو سینیٹ کی جانب سے توثیق کیا جانا باقی ہے۔ رپورٹس یہ بھی بتا رہی ہیں کہ میساچوسیٹس کے سابق گورنر مٹ رومنی جو ہیلی کے حلیف بتائے جاتے ہیں۔ ملک کے نئے وزیر خارجہ کے لئے نومنتخبہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی اولین ترجیحات میں شامل ہیں جبکہ گزشتہ ہفتہ ہی یہ خبریں بھی گشت کررہی تھیں کہ نکی ہیلی کو امریکہ کا نیا وزیر خارجہ بنایا جاسکتا ہے، البتہ بعض گوشوں سے یہ بھی کہا جارہا ہے کہ نکی ہیلی کو اقوام متحدہ کے لئے امریکہ کا سفیر مقرر کئے جانے پر اعتراضات ہوسکتے ہیں کیونکہ ہیلی کے پاس کوئی سفارتی تجربہ نہیں ہے جس سے وہ موثر خارجہ پالیسی وضع کرسکیں۔ حالانکہ انتخابی مہمات کے دوران نکی ہیلی نے ٹرمپ پر کافی تنقیدیں کی تھیں تاہم بعدازاں انہوں نے اپنا نظریہ تبدیل کرتے ہوئے ٹرمپ کی یہ کہہ کر تائید شروع کردی کہ وہ نہ تو ٹرمپ کی مداح ہیں اور نہ ہلاری کی۔ نکی ہیلی کا اصلی نام نمرتا رندھاوا ہے جو جنوبی کیرولینا کی پہلی خاتون گورنر ہیں جسے ایک انتہائی قدامت پسند ریاست تصور کیا جاتا ہے جہاں نسلی امتیاز برتے جانے کی ایک طویل تاریخ موجود ہے۔ بہرحال اس وقت نکی ہیلی کو ’’ری پبلیکن پارٹی کا ابھرتا ستارہ‘‘ کہا جارہا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT