Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / نہرو گاندھی کے نام سے منسوب اسکیمات و یادگاروں پر نظر ثانی کے مطالبہ کی مذمت

نہرو گاندھی کے نام سے منسوب اسکیمات و یادگاروں پر نظر ثانی کے مطالبہ کی مذمت

فلم اسٹار رشی کپور کے بیان پر رکن راجیہ سبھا وی ہنمنت راؤ کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 19 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : سکریٹری اے آئی سی سی و رکن راجیہ سبھا مسٹر وی ہنمنت راؤ نے فلم اسٹار رشی کپور کی جانب سے ملک میں نہرو گاندھی کے نام پر رکھے گئے اسکیمات اور یادگاروں پر نظر ثانی کرنے کے مطالبہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے کانگریس چھوڑنے والے قائدین کے علاوہ تلگو دیشم کے قائدین کو پارٹی میں شامل کرنے کا مطالبہ کیا ۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر وی ہنمنت راؤ نے کہا کہ فلم اسٹار رشی کپور نہرو گاندھی کی تحریک آزادی میں حصہ داری ملک کی ترقی اور عوام کے فلاح و بہبود کی خدمات اور قربانیوں سے ناواقف ہے ۔ صرف سستی شہرت حاصل کرنے اور مودی و آر ایس ایس کی خوشنودی حاصل کرنے کے لیے نہرو گاندھی کے ارکان خاندان کے ناموں پر نظر ثانی کرنے کا مطالبہ کیا ہے جس کی وہ سخت مذمت کرتے ہیں ۔ 21 مئی تا 21 جون ایک ماہ تک تلنگانہ میں انسداد دہشت گردی مناتے ہوئے وہ تلنگانہ کا دورہ کریں گے ۔ نہرو اور گاندھی کی ملک کے لیے خدمات اور قربانیوں کے تعلق سے معلومات فراہم کرتے ہوئے شعور پیدا کریں گے ۔ مسٹر وی ہنمنت راؤ نے کہا کہ کانگریس کے دور اقتدار میں بڑے پیمانے پر ترقیاتی اقدامات کئے گئے ساتھ ہی کئی فلاحی اسکیمات کو متعارف کراتے ہوئے کروڑہا عوام کو فائدہ پہونچایا گیا ۔ تاہم کانگریس پارٹی اس کی مناسب تشہیر کرنے میں ناکام ہوئی ہے جب کہ بی جے پی کے زیر قیادت این ڈی اے حکومت کی 2 سالہ کارکردگی مایوس کن ہے ۔ بحیثیت وزیر اعظم نریندر مودی پوری طرح ناکام ہوگئے ۔ کانگریس پارٹی کی جانب سے پارٹی چھوڑ کر جانے والے قائدین کو دوبارہ پارٹی میں شامل نہ کرنے اور مخالف پارٹی سرگرمیوں میں ملوث رہنے والے قائدین کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا انتباہ دینے کے دوسرے ہی دن مسٹر وی ہنمنت راؤ نے پارٹی چھوڑ کر جانے والے قائدین اور تلگو دیشم قائدین کو پارٹی میں شامل کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے پارٹی حلقوں میں نئی بحث چھیڑ دی ہے ۔ پالیرو میں کانگریس کی ناکامی کا جائزہ لینے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ریاست میں کانگریس پارٹی کو ایک کے بعد ایک انتخابات میں شکست ہورہی ہے ۔ مگر پارٹی قیادت کی جانب سے اس کا جائزہ نہیں لیا جارہا ہے ۔۔

شعبہ سوشیل ورک مانو کے 5طلبہ کا آن کیمپس پلیسمنٹ
حیدرآباد ،19؍ مئی (پریس نوٹ) مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی ، شعبۂ سماجی عمل (Social Work) کے 5 طلبہ کا حیدرآباد کے ایک مشہور غیر سرکاری ادارے (این جی او) ’’صفا سوسائٹی‘‘ کے لیے انتخاب عمل میں آیا ہے۔ یہ تنظیم حیدرآباد کے پسماندہ علاقوں میں خواتین کی با اختیاری اور لڑکیوں کی تعلیم کے میدان میں کام کر رہی ہے۔ تنظیم نے اپنے دائرہ کار کو وسعت دینے کے لیے شعبۂ سوشل ورک کو تازہ بھرتیوں کے لیے منتخب کیا ہے۔ شعبہ کے خدا داد خان کو سنٹر کوآرڈینیٹر، عبدالستار کو بیدر، کرناٹک میں کمیونٹی موبیلائزر ، جبکہ صدام حسین اور محمد ریحان کو حیدرآباد میں کمیونٹی موبیلائزر کی حیثیت سے انتخاب عمل میں آیا۔ ایک طالب علم صفی اللہ شیخ کا حیدرآباد کونسل آف ہیومن ویلفیئر (ایچ سی ایچ ڈبلیو) میں کمیونٹی موبلائیزر کے عہدہ پر تقرر ہوا۔ مجموعی طور پر ایم ایس ڈبلیو کے 9 طلبہ پیرامل فائونڈیشن، صفا انڈیا اور ایچ سی ایچ ڈبلیو میں انتخاب عمل میں آیا۔ تمام اداروں نے طلبہ کو پیشہ ورانہ تربیت فراہم کرنے پر شعبہ کی کاوشوں کی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT