Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / نیرلہ واقعہ کے خاطی پولیس عہدیداران کے خلاف کارروائی کا مطالبہ

نیرلہ واقعہ کے خاطی پولیس عہدیداران کے خلاف کارروائی کا مطالبہ

ڈی جی پی سے کل جماعتی وفد کی ملاقات ، دلتوں پر مظالم کی مذمت
حیدرآباد ۔ 11 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : کل جماعتی وفد نے آج ڈی جی پی انوراگ شرما سے ملاقات کرتے ہوئے نیرلہ واقعہ پر ایس پی کے بشمول تھرڈ ڈگری استعمال کرنے والے تمام پولیس عہدیداروں کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ۔ کل جماعتی وفد میں تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کے ورکنگ پریسیڈنٹ ملوبٹی وکرامارک ، تلنگانہ تلگو دیشم پارٹی کے ورکنگ پریسیڈنٹ ریونت ریڈی ، تلنگانہ سی پی آئی کے سکریٹری چاڈا وینکٹ ریڈی کے علاوہ دوسری جماعتوں کے قائدین نے آج شام ڈی جی پی سے ملاقات کرتے ہوئے نیرلہ واقعہ میں دلتوں پر پولیس کی جانب سے کئے گئے حملے کی شکایت کی ۔ ریت مافیا کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے دلتوں اور بی سی طبقات کے غریب عوام پر ظلم و زیادتی کرنے کی مذمت کی ۔ بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے بٹی وکرامارک نے کہا کہ نیرلہ میں ریت مافیا من مانی کررہا ہے ۔ لاریوں کی ٹکر سے غریب عوام کی اموات ہورہی ہیں ایک ہی نمبر پر 6 لاریاں چلائی جارہی ہیں لیکن افسوس کی بات ہے عوام کی محافظ پولیس عوام کا تحفظ کرنے بجائے مافیا راج کے مفادات کا تحفظ کررہی ہے ۔ نیرلہ واقعہ میں 4 دلت اور تین بی سی طبقہ کے افراد کے خلاف پولیس نے نہ صرف تھرڈ ڈگری کا استعمال کیا ہے بلکہ جسم کے نازک حصوں پر انہیں برقی شاک دیتے ہوئے مار پیٹ کی گئی ہے ۔ متاثرین کی جانب سے ایس سی ایس ٹی ایکٹ کے تحت مقدمات درج کرنے کی تحریری طور پر درخواست دینے کے باوجود پولیس نے اس کو نظر انداز کردیا ہے ۔ تحقیقات کے نام پر پولیس کی جانب سے واقعہ پر پانی پھیرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ جس کی وہ سخت مذمت کرتے ہیں اور خاطیوں کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں ۔ ریونت ریڈی نے نیرلہ واقعہ میں ایک پولیس ملازم کو معطل کرنے کے فیصلہ کو آنسو پوچھنے کے مترادف قرار دیتے ہوئے ایس پی کے علاوہ دوسرے اعلیٰ پولیس عہدیداروں کے خلاف کارروائی کرنے تک احتجاج کو جاری رکھنے کا اعلان کیا ۔ انہوں نے شام 6 بجے کے بعد ریت کی لاریوں کی آمد و رفت کو فوری روک دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ایسا لگتا ہے محکمہ پولیس کے ٹی آر کو خوش کرنے کے لیے کام کررہی ہے ۔ دلتوں سے انصاف کے لیے ضرورت پڑنے پر عدلیہ کے علاوہ انسانی حقوق کمیشن سے بھی رجوع ہونے سے گریز نہیں کیا جائے گا ۔ سی پی آئی کے اسٹیٹ سکریٹری چاڈا وینکٹ ریڈی نے کہا کہ ٹی آر ایس کے دور حکومت میں غریب عوام کے علاوہ سماج کا کوئی بھی طبقہ خوش نہیں ہے ۔ صرف کنٹراکٹرس اور مافیا دنیا کے غیر سماجی افراد کے مفادات کا تحفظ کیا جارہا ہے اور غریب عوام کو نظر انداز کیا جارہا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT