Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / نیشنل کانفرنس ویمنس ونگ کی احتجاجی ریلی، حکومت پر ناکامی کا الزام

نیشنل کانفرنس ویمنس ونگ کی احتجاجی ریلی، حکومت پر ناکامی کا الزام

کشمیر میں شمال سے جنوب تک نوجوانوں کیخلاف حکومتی ظلم و ستم ۔ پی ڈی پی حکومت عوام دشمن ۔ قوم کو فوج و فورسز کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا
سرینگر ، 24مئی (سیاست ڈاٹ کام) جموں وکشمیر کی سب سے بڑی اپوزیشن پارٹی نیشنل کانفرنس کی ویمنس ونگ نے آج یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر نوائے صبح کمپلیکس سے ایک ریلی برآمد کرکے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) و بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی مخلوط حکومت کی مبینہ ناکامیوں اور عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف احتجاج کیا۔ تاہم جب ریلی کی شرکاء خواتین سیول سکریٹریٹ کی طرف مارچ کرنے لگیں تو پولیس کی بھاری جمعیت نے پولو گراؤنڈ کے نزدیک سڑک کو بند کرکے انہیں آگے جانے کی اجازت نہیں دی۔ پارٹی کی صوبائی صدر ویمنس ونگ شمیمہ فردوس (ایم ایل اے حبہ کدل) کی قیادت میں برآمد ہوئی احتجاجی ریلی میں ویمنس ونگ سے وابستہ سینئر عہدیداروں اور کارکنوں نے شرکت کی۔ جلوس میں پی ڈی پی حکومت کی نوجوان کش پالیسیوں ،  پیلٹ گن اور طلباو طالبات پر طاقت کے بے تحاشہ استعمال کے خلاف نعرے بازی کی گئی۔ ٹی آر سی چوک میں احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے شمیمہ فردوس نے کہا کہ موجودہ حکومت کشمیر دشمن اور عوام دشمن ثابت ہوئی ہے ۔ حکومت نے عوام خصوصاً نوجوانوں کے خلاف اعلانِ جنگ کر رکھا ہے ۔ پی ڈی پی کی ڈھائی سالہ حکومت میں کشمیر پر ظلم و ستم کے تمام ریکارڈ مات کئے گئے اور یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے ۔

اسکولوں اور کالجوں میں گھس کر پیلٹ ، بلٹ اور ٹیئر گیس شلوں کی بوچھاڑ کی جاتی ہے ، شمال سے لیکر جنوب تک حکومتی ظلم و ستم کیخلاف پُرامن احتجاج کررہے طلباء و طالبات کیخلاف طاقت کا بے تحاشہ استعمال کرکے جمہوریت اور اظہارِ رائے کی آزادی کی مٹی پلید کر دی گئی۔ نوجوان کو جیپ کے ساتھ باندھ کر انسانی ڈھال بنانے والے فوجی افسر کو اعزاز سے نوازا جارہا ہے۔ ظلم و ستم کی ایسی مثالیں ماضی میں کہیں نہیں ملتی ہیں۔ لیکن پی ڈی پی حکومت اقتدار کو گلے لگائے بیٹھی ہے ۔ شمیمہ فردوس نے کہا کہ حد تو یہ ہے کہ خاتون وزیر اعلیٰ ہونے کے باوجود اب خواتین کو بیرونی جیلوں میں منتقل کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وادی بھر میں طلباء و طالبات کا حکومت کے خلاف احتجاج لمحہ فکر ہے۔ انہوں نے کہا کہ پیلٹ سے نوجوانوں کو نابینا اور اپاہج بنانا معمول بن گیا ہے ۔ گزشتہ ایک سال میں 18ہزار شہریوں کو مضروب کیا گیا، 12ہزار سے زائد کو اَسیر زندان بنایا گیا، 900کے قریب نوجوانوں پر پی ایس اے کا اطلاق عمل میں لایا گیا، 70ہزار گھروں کی توڑ پھوڑ کی گئی اور ظلم و ستم کا یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے ۔ گویاوادی کشمیر کو ایک اذیت خانہ میں تبدیل کرکے رکھ دیا گیا ہے ، عوام کی زندگی اجیرن بنا دی گئی ہے ۔ رات کی تاریکی میں چھاپہ مار کارروائیاں انجام دے آبادیوں کو خوف زدہ اور دہشت زدہ کیا جارہا ہے ۔ شمیمہ فردوس نے کہا کہ پی ڈی پی سرکار نے کشمیری قوم کو فوج اور فورسز کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے۔ ریلی میں صوبائی سکریٹری ویمنس ونگ صبیہ قادری، پارٹی لیڈر رخسانہ جی کے علاوہ کئی عہدیداروں نے بھی شرکت کی۔

TOPPOPULARRECENT