Wednesday , September 20 2017
Home / دنیا / نیویارک :بنگلہ دیشی امام پر مسجد کے قریب قاتلانہ حملہ

نیویارک :بنگلہ دیشی امام پر مسجد کے قریب قاتلانہ حملہ

جوپلن میں اندھا دھند فائرنگ سے پانچ افرا د زخمی ‘ مشتبہ شخص زیرحراست ‘ ملواکی میں احتجاج
نیویارک۔14اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک بنگلہ دیشی 58سالہ امریکی شہری امام اور ان کے نائب کو مسجد کے قریب حملہ کر کے ایک بندوق بردار نے ہلاک کردیا ۔ دن دھاڑے قتل کی واردات پر امریکی شہریوں میں اسلام دشمن لفاظی کی وجہ سے بڑھتے ہوئے تعصب کے اندیشے پیدا ہوگئے ہیں ۔ پولیس کے بموجب مولانا اکون جی اور ان کے نائب تراالدین جن کی عمر 64سال تھی ظہر کی نماز کے بعد الفرقان جامع مسجد سے اپنی قیامگاہ پیدل جارہے تھے جب کہ حملہ آور نے پیچھے سے ان پر گولی چلاکر انہیں ہلاک کردیا ۔ حملہ آور کا رنگ اوسط درجہ کا تھا ۔ وہ ایک مرد تھا جو پولو شرٹ اور نیکر میں ملبوس تھا ۔ عینی شاہدین اور ویڈیو فلم بندی کی مدد سے قتل کی واردات کے فوری بعد حملہ آور کو فرار ہوتے ہوئے دیکھا گیا ۔ اس کے ہاتھ میں بندوق تھی ۔

فائرنگ کے وقت اس نے مسلمانوں جیسا لباس پہن رکھا تھا ۔ پولیس کے بموجب دونوں کو نازک حالت میں قریبی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں سے جانبر نہیں ہوسکے تحقیقات جاری ہے ۔ تاحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ۔ جوپلن سے موصولہ اطلاع کے بموجب اندھا دھند فائرنگ سے کم از کم پانچ افراد بشمول جوپلن چرچ کے تین ارکان زخمی ہوگئے ۔ پولیس کے بموجب یہ افراد سینٹ لوئی جانے کیلئے روانہ ہورہے تھے جب کہ ایک 26سالہ مشتبہ شخص نے ان پر اندھا دھند فائرنگ کردی ۔ اس شخص کو حراست میںلے لیا گیا ہے اور اُس کے خلاف الزامات درج کرلئے گئے ہیں ۔ پولیس نے کہا کہ مشتبہ شخص نے اس فائرنگ کے بعد ایک پیک اپ ٹرک پر بھی فائرنگ کی تھی جس سے دو افراد بشمول ڈرائیور زخمی ہوگئے ۔ ڈرائیور دواخانہ میں زیر علاج ہے ۔
ملواکی سے موصولہ اطلاع کے بموجب ملواکی کے مضافاتی علاقہ میں ایک عہدیدار کے ہاتھوں ٹریفک اسٹاپ پر ایک شخص کی ہلاکت کے بعد احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT