Thursday , August 24 2017
Home / ہندوستان / نیٹ بل لوک سبھا میں منظور، خانگی کالجس بھی شامل

نیٹ بل لوک سبھا میں منظور، خانگی کالجس بھی شامل

آئندہ تعلیمی سال سے ملک گیر سطح پر یکساں اہلیتی ٹسٹ
نئی دہلی ۔ /19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) میڈیکل اور ڈینٹل کورسیس کیلئے ملک گیر سطح پر سنگل کامن انٹرنس کے انعقاد کی راہ ہموار کرتے ہوئے لوک سبھا میں آج ایک بل منظور کرلیا گیا ۔ حکومت نے کہا ہے کہ خانگی کالجس بھی اسی کے دائرہ کار میں شامل ہوں گے ۔ انڈین میڈیکل کونسل (ترمیمی) بل 2016 ء اور دی ڈنٹسٹس (ترمیمی) بل 2016 ء میں قومی اہلیتی انٹرنس ٹسٹ (NEET) کو دستوری موقف فراہم کیا گیا ہے ۔ یہ آئندہ تعلیمی سال سے متعارف کیا جائے گا ۔ وزیر صحت جے پی نڈا نے یہ بل پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس کے تین مقاصد ہیں جن میں کئی امتحانات سے گریز ، شفاف اور غیرجانبدار امتحانات کا انعقاد اور استحصال سے پاک سسٹم شامل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے کئی میڈیکل انٹرنس امتحانات کیلئے طلبہ کو طویل مسافت طئے کرنی پڑتی تھی ۔ اس کے علاوہ کیاپٹیشن فیس کے نام پر استحصال کیا جاتا تھا ۔ ارکان کی تشویش بالخصوص ٹاملناڈو کا حوالہ دیتے ہوئے جہاں 85 فیصد تحفظات ہیں انہوں نے واضح کیا کہ ہم ریاستی کوٹہ جوں کا توں رکھیں گے ۔ تاہم اناڈی ایم کے ارکان اس وضاحت سے مطمئن نہیں تھے اور واک آؤٹ کردیا ۔ نڈا نے کہا کہ این سی ای آر ٹی نصاب کی بنیاد پر امتحان منعقد ہوگا ۔ انڈر گریجویٹ امتحان سی بی ایس ای اور پوسٹ گریجویٹ امتحان نیشنل بورڈ آف اگزامنیشن منعقد کرے گا۔

TOPPOPULARRECENT