Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / نیٹ کے بارے میں اندرون دو یوم فیصلہ

نیٹ کے بارے میں اندرون دو یوم فیصلہ

قانونی مشاورت جاری، اہم مسائل حل کرلئے جائیں گے : جے پی نڈا

نئی دہلی ۔ 18 مئی (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ کی جانب سے میڈیکل کالجس میں داخلوں کیلئے ملک گیر سطح پر NEET کے انعقاد کی ہدایت پر عمل آوری کے سلسلہ میں مرکزی حکومت کی قانونی مشاورت جاری ہے۔ بعض ریاستوں کی جانب سے اس کی مخالفت کے پیش نظر مرکز نے یہ قدم اٹھایا اور اندرون دویوم اس ضمن میں فیصلہ کیا جائے گا۔ مرکزی وزیر صحت جے پی نڈا نے بتایا کہ عنقریب ہم اس مسئلہ کا حل ڈھونڈ نکالیں گے۔ نیٹ کا مرحلہ I ہوچکا اور مرحلہ II ہونا باقی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت تین اہم مسائل ہیں ان میں جاریہ امتحانات، نصاب اور زبان شامل ہیں۔ اس وقت ہم صحیح سمت میں جارہے ہیں اور قانونی مشاورت شروع ہوچکی ہے۔ آئندہ ایک یا دو دن میں ہم کوئی ایسا لائحہ عمل تیار کرلیں گے جس کی اس مسئلہ سے نمٹنے کیلئے ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ صرف بات چیت کے ذریعہ ہی حل تلاش کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ قومی اہلیتی انٹرنس ٹسٹ (NEET) متعارف کروانے کا بنیادی مقصد ملک بھر میں کرپشن اور بے قاعدگیوں پر قابو پانا ہے اور حکومت نے اس ضمن میں عملی اقدامات شروع کردیئے ہیں۔ اندرون دو یوم صورتحال واضح ہوجائے گی۔ جے پی نڈا کا یہ تبصرہ ان اطلاعات کے پس منظر میں سامنے آیا کہ حکومت NEET پر عمل آوری ایک سال ملتوی کرنے کیلئے آرڈیننس جاری کرسکتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت میں یہ اتفاق پایا جاتا ہیکہ جو مسائل اٹھائے جارہے ہیں ان کی یکسوئی کی جائے۔ نڈا نے کہا کہ حکومت میں متعلقہ افراد کے اتفاق رائے پر پہنچنے کے بعد ہی وزارت صحت اس سمت پیشرفت کررہی ہے۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا حکومت اس مسئلہ پر قانونی راستہ اختیار کرے گی تو انہوں نے بتایا کہ نیٹ کا دوسرا مرحلہ 24 جولائی کو ہوگا اور تمام تیاریاں جاری ہیں۔ بڑی سیاسی جماعتوں اور کئی ریاستوں نے سپریم کورٹ کے فیصلہ پر عمل آوری ایک سال ملتوی کرنے کی حمایت کی ہے۔ مرکز نے اس ضمن میں مشاورت شروع کردی اور کہا کہ یہ مسئلہ عاملہ سے تعلق رکھتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT