Thursday , June 29 2017
Home / Top Stories / نیٹ کے دوبارہ انعقاد کیلئے درخواست

نیٹ کے دوبارہ انعقاد کیلئے درخواست

فوری طور پر سماعت سے سپریم کورٹ کا انکار
نئی دہلی 25 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کورسیس میں داخلوں کیلئے قومی اہلیتی امتحان و انٹرنس ٹسٹ (نیٹ) کے از سر نو انعقاد کی ہدایت دینے کی استدعا والی درخواست کی فوری سماعت سے انکار کردیا ہے ۔ یہ درخواست جسٹس ایل ناگیشور راؤ اور جسٹس نوین سنہا کی تعطیلاتی بنچ کے روبرو پیش ہوئی تھی جس میں استدعا کی گئی تھی کہ نیٹامتحان دوبارہ منعقد کیا جائے ۔ درخواست میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ امتحانات کے پرچوں کا بہار میں افشا ہوگیا تھا اور ان کو راجستھان اور مغربی بنگال جیسی ریاستوں میں بھی پھیلایا گیا تھا ۔ واضح رہے کہ ایک دن قبل ہی مدراس ہائیکورٹ نے نیٹ2017 کے نتائج کی ملک بھر میں اشاعت پر حکم التوا جاری کردیا تھا ۔ جاریہ سال 7 مئی کو نیٹ کا انعقاد عمل میں آیا تھا جس میں 1,900 مراکز میں ملک بھر سے تقریبا 11 لاکھ ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کورسیس میں داخلوں کے خواہاں امیدواروں نے حصہ لیا تھا ۔ عدالت سے کہا گیا تھا کہ امتحان کے نتائج کی اجرائی پر حکم التوا بھی جاری کیا جانا چاہئے ۔ تاہم بنچ نے کہا کہ چونکہ مدراس ہائیکورٹ کی جانب سے پہلے ہی نتائج کی اشاعت پر حکم التوا جاری کردیا گیا ہے ایسے میں اس درخواست کی فوری سماعت کی ضرورت نہیں ہے ۔ بنچ نے درخواست گذار کے وکیل سے کہا کہ جو کچھ بھی وجوہات بتائی جا رہی ہوں لیکن حقیقت یہ ہے کہ اس پر عبوری حکم التوا ہے ۔ نتائج کے اعلان پر عبوری حکم التوا موجود ہے ۔ اس کی وجوہات مختلف ہوسکتی ہیں لیکن نتائج کا اعلان نہیں کیا جائیگا ۔ اس حال میں اس درخواست کی ہنگامی طور پر سماعت کی کوئی ضرورت نہیں ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT