Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / نیٹ-2017 : میڈیکل داخلہ امتحان منسوخ کرنے کی درخواست

نیٹ-2017 : میڈیکل داخلہ امتحان منسوخ کرنے کی درخواست

چینائی ۔ /23 مئی (سیاست ڈاٹ کام) مدراس ہائیکورٹ نے ایک طالبعلم کی والدہ کی جانب سے نیٹ-2017  سے دستور کی دفعہ 14 کے تحت طلباء کے حقوق کی خلاف ورزی ہونے کا الزام عائد کرنے پر سی بی ایس ای کو نوٹس جاری کرتے ہوئے اس کا موقف دریافت کیا ۔ /7 مئی کو قومی سطح کے اہلیت و داخلہ امتحان نیٹ -2017 انڈر گریجویٹ میڈیکل اور ڈینٹل کورسیس کیلئے امیدوار منتخب کرنے منعقد کیا گیا تھا ۔ تعطیلات کی بنچ کے جسٹس آر مہادیون نے سی بی ایس ای کا موقف طلب کرتے ہوئے ایک نوٹس جاری کردی ۔ بنچ نے سی بی ایس ای کو یہ کہتے ہوئے نوٹس جاری کی کہ مقدمہ کی آئندہ سماعت /24 مئی کو مقرر ہے ۔ امیدوار نے انگریزی زبان میں امتحان دیا تھا ۔ طالبعلم کی والدہ نے اس امتحان کو دستور کی دفعہ 14 کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے ادعا کیا کہ مختلف زبانوں بشمول ہندی ، انگریزی اور ٹامل میں سوالات کے پرچہ فراہم نہیں کئے گئے تھے جس کی وجہ سے طلباء کو دشواریاں ہوئیں ۔ درخواست گزار نے کہا کہ نیٹ کے تحت انتخاب اہلیت کی مساوی بنیادوں پر جانچ کے مترادف نہیں ہوگا ۔ اس کے ذریعہ غیرمساوی افراد کی مساوی افراد سے مسابقت کا ماحول پیدا کیا گیا ہے ۔ یہ امتحان تمام بڑی زبانوں میں بشمول ٹامل ، انگلش اور ہندی ملک گیر سطح پر منعقد کیا گیا تھا ۔ سوالات کا تبصرہ سی بی ایس ای کے نصاب کی بنیاد پر انگریزی میں جاری کیا گیا تھا جبکہ ٹامل زبان کا پرچہ ریاستی نصاب تعلیم کی بنیاد پر تھا ۔ طالبعلم کی والدہ نے الزام عائد کیا ہے کہ مختلف زبانوں میں سوالات کا پرچہ ایک جیسا نہیں تھا ۔ مختلف زبانوں میں مختلف سوالات درج کئے گئے تھے ۔ یہ موجودہ جانچ کے نظام کی اور دستور کی دفعہ 14 کی خلاف ورزی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT