Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / وائس چانسلر اپاراؤ کا استعفیٰ دینے سے انکار

وائس چانسلر اپاراؤ کا استعفیٰ دینے سے انکار

’مظلومیت کا دعویٰ کرنے والے بعض طلبہ کا مطالبہ ناقابل قبول‘
حیدرآباد 19 جنوری (پی ٹی آئی) حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی کے وائس چانسلر اپاراؤ نے جو ایک دلت طالب علم کی خودکشی کے تنازعہ کا محور بنے ہوئے ہیں ’’ستم زدہ ہونے کے شاکی بعض طلبہ‘‘ کے مطالبہ پر مستعفی ہونے سے صاف طور پر انکار کردیا ہے۔ اپا راؤ نے یونیورسٹی کے اس فیصلے سے دو مرکزی وزراء سمرتی ایرانی اور بنڈارو دتاتریہ کو بے تعلق ظاہر کرنے کی کوشش کی ہے جس (فیصلہ) کے نتیجہ میں روہت کو مبینہ طور پر انتہائی قدم اٹھانے پر مجبور ہونا پڑا تھا۔ مختلف سیاسی جماعتوں کے تائید یافتہ احتجاجی طلبہ کی جانب سے ان کے استعفیٰ کے مطالبہ کے بارے میں ایک سوال پر اپا راؤ نے جواب دیا کہ ’’میں اس قسم کے مطالبات پر غور نہیں کرسکتا‘‘۔ راؤ نے کہاکہ یہ طلبہ جو خود کو ستم رسیدہ محسوس کرتے ہیں ان سے استعفیٰ کا مطالبہ کررہے ہیں۔ لیکن کوئی بھی کام باضابطہ قاعدہ کے مطابق کیا جانا چاہئے اور اس کے لئے مروجہ عمل کے ذریعہ مناسب قدم اٹھایا جانا چاہئے۔ دتاتریہ کے تحریر کردہ مکتوب کی بنیاد پر مرکزی وزارت فروغ انسانی وسائل کی مبینہ مداخلت سے متعلق ایک سوال پر اپا راؤ نے جواب دیا کہ عام آدمی کی شکایات پر عام طور پر مکتوب تحریر کرنا عوامی نمائندوں کا معمول ہوتا ہے لیکن (روہت سے متعلق) یونیورسٹی نے خالصتاً اپنے طور پر فیصلہ کیا تھا جس سے وزارت فروغ انسانی وسائل کا کوئی سروکار نہیں ہے‘‘۔ ایچ سی یو کے چانسلر سی رنگا راجن نے کہاکہ یہ واقعہ انتہائی بدبختانہ ہے‘‘۔ ایسا نہیں ہونا چاہئے تھا۔ تاہم انھوں نے تفصیلات سے لاعلمی کا اظہار کیا۔

TOPPOPULARRECENT