Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / وائی ایس آر کانگریس کے ایک اور رکن اسمبلی کی تلگو دیشم میں شمولیت

وائی ایس آر کانگریس کے ایک اور رکن اسمبلی کی تلگو دیشم میں شمولیت

چیف منسٹر اے پی این چندرا بابو نائیڈو سے کے وینکٹ رمنا کی ملاقات
حیدرآباد ۔ 4 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ایک اور رکن اسمبلی کے وینکٹ رمنا نے آج تلگو دیشم میں شمولیت اختیار کرلی ۔ تلگو دیشم میں شامل ہونے والے وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ارکان اسمبلی کی تعداد بڑھ کر 9 ہوگئی ہے ۔ یہاں اس بات کا ذکر بے جا نہ ہوگا کہ وائی ایس آر کانگریس پارٹی کی ایک جانب سے آندھرا پردیش کے صدر مقام امراوتی میں کروڑہا روپئے کا اراضی اسکام ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے حکومت کے خلاف مہم چلائی جارہی ہے تو دوسری طرف وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ارکان اسمبلی ایک ایک کر کے تلگو دیشم میں شامل ہورہے ہیں ۔ ضلع سریکاکولم کی نمائندگی کرنے والے وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے رکن اسمبلی کے وینکٹ رمنا نے ریاستی وزیر اچم نائیڈو کے ساتھ مل کر وجئے واڑہ پہونچتے ہوئے چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو سے ملاقات کرتے ہوئے تلگو دیشم میں شمولیت اختیار کرلی ۔ بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اپنے اسمبلی حلقہ کی ترقی کے لیے وہ چیف منسٹر چندرا بابو نائیڈو کی کارکردگی سے متاثر ہو کر ٹی آر ایس میں شامل ہوئے ہیں ۔ آندھرا پردیش کی ترقی بالخصوص نئے صدر امراوتی کی تعمیر اور بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے لیے تلگو دیشم حکومت کی کارکردگی ناقابل فراموش ہے ۔ آندھرا پردیش کی تعمیر نو میں تعاون کرنے کے لیے وہ تلگو دیشم میں شامل ہورہے ہیں ان پر کوئی دباؤ نہیں ہے اور نہ ہی تلگو دیشم میں شامل ہونے پر انہیں کوئی لالچ دیا گیا ہے ۔ قائد اپوزیشن و صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی جگن موہن ریڈی کے علاوہ دوسرے قائدین کی جانب سے 20 تا 30 کروڑ روپئے ارکان اسمبلی کو خریدنے پر پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اگر ثبوت پیش کردیا جائے تو وہ سیاست سے کنارہ کشی اختیار کرلیں گے ۔ دوسری جماعتوں سے وائی ایس آر کانگریس پارٹی میں شامل ہونے والے قائدین کو پارٹی تبدیل کرنے پر مجھے تنقید کا نشانہ بنانے کا انہیں اخلاقی حق بھی نہیں ہے کیوں کہ وہ خود بھی دوسری جماعتوں سے وائی ایس آر کانگریس پارٹی میں شامل ہوئے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT