Monday , September 25 2017
Home / Top Stories / وائی ایس آر کانگریس کے پانچ ارکان مقننہ تلگودیشم میں شامل

وائی ایس آر کانگریس کے پانچ ارکان مقننہ تلگودیشم میں شامل

ڈیفکشن وائرس آندھراپردیش تک پھیل گیا …

نائیڈو کی رہائش گاہ پر جلیل خان ‘ بھوماناگی ریڈی ‘اکھیلا  پریہ اوردوسروں کا خیرمقدم ‘ جگن کودھکہ
وجئے واڑہ ۔22فبروری ( پی ٹی آئی) آندھراپردیش کی اصل اپوزیشن جماعت وائی ایس آر کانگریس کو آج زبردست جھٹکہ لگا جب اس کے چار ارکان اسمبلی اور ایک رکن قانون ساز کونسل نے اپنی پارٹی سے انحراف کرتے ہوئے حکمراں تلگودیشم پارٹی میں شمولیت اختیار کی ۔ وجئے واڑہ میں آج انتہائی ڈرامائی دن دیکھا گیا جہاں تلگودیشم پارٹی کے صدر اور ریاستی چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی موجودگی میں چار ارکان اسمبلی بھوما ناگی ریڈی ( نندیال) ‘ ان کی دختر اکھیلا پریہ ( الہ گڈہ ) ‘ آدی نارائن ریڈی ( جملامڈ گو) اور جلیل خان ( وجئے واڑہ مغربی ) نے حکمراں جماعت میں شمولیت اختیار کی ۔ وائی ایس آر کانگریس کے سربراہ اور اپوزیشن لیڈر جگن موہن ریڈی کے آبائی ضلع کڑپہ سے تعلق رکھنے والے رکن قانون ساز کونسل نارائن ریڈی نے بھی نائیڈو کی جماعت میں شمولیت اختیار کی ۔ وجئے واڑہ میں آج دن بھر ڈرامائی سیاسی صورتحال دیکھی گئی اور بالآخر رات میں وائی ایس آر کانگریس کے ارکان مقننہ ‘ دریائی ساحل کے قریب چندرا بابو نائیڈو کی رہائش گاہ پہنچے جہاں انہیں رسمی طور پر تلگودیشم میں شامل کرلیا گیا ۔گروہ واری سیاسی رقابتوں سے بری طرح متاثرہ اضلاع کڑپہ اور کرنول کے چند تلگودیشم پارٹی نے اپوزیشن میں شامل اپنے حریفوں کی شمولیت پر اعتراض کیا تھا ‘ تاہم چندرا بابو نائیڈو نے اپنی پارٹی کے قائدین راما سبا ریڈی کو سمجھا لیا جو آدی نارائنا کے تلگودیشم میں داخلے کی مخالفت کررہے تھے ۔ اس طرح کرنول میں چکراپانی ریڈی اور ان کے بھائی موہن ریڈی اپنی پارٹی میں بھوما اور ان کی دختر کی شمولیت کی مخالفت کررہے تھے ‘ تاہم ڈپٹی چیف منسٹر کے ای کرشنا مورتی نے کہا کہ بھوما اور ان کی دختر کی تلگودیشم میں شمولیت کا خیرمقد م کیا جائے گا ۔

TOPPOPULARRECENT