Monday , October 23 2017
Home / ہندوستان / وادی میں انٹرنیٹ سرویس بند

وادی میں انٹرنیٹ سرویس بند

سرینگر۔ 9 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) سرینگر لوک سبھا حلقہ میں ضمنی انتخابات کیلئے آج رائے دہی کے پیش نظر انتظامیہ نے کسی بھی طرح کی افواہوں کو پھیلنے سے روکنے وادی میں تمام مواصلاتی کمپنیوں بشمول بی ایس این ایل کی براڈ بیانڈ انٹرنیٹ سروس کو گذشتہ نصف شب ہی معطل کردیا تھا۔انٹرنیٹ سروس کی معطلی کے سبب مختلف میڈیا اداروں سے وابستہ جرنلسٹوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ سابق چیف منسٹر عمر عبداللہ نے انٹرنیٹ سروس کی معطلی پر ریاستی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔انہوں نے ٹوئٹ کیا کہ یہ پہلی مرتبہ ہے کہ وادی میں پولنگ کے دن انٹرنیٹ سروس بند کی گئی۔ عمر عبداللہ نے مزید کہا کہ وادی میں تشدد کے واقعات کیلئے ریاست کی موجودہ حکومت ذمہ دار ہے۔
فاروق عبداللہ کے بشمول 9   امیدوار انتخابی میدان میں
٭  سرینگر کی پارلیمانی نشست کیلئے نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) کے نذیر احمد خان سمیت 9 امیدوار قسمت آزمائی کررہے ہیں۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے اتوار کی صبح اپنے فرزند عمر عبداللہ کے ہمراہ سونا وار علاقہ میں واقع برن ہال اسکول میں قائم پولنگ مرکز پر حق رائے دہی سے استفادہ کیا ۔ سرینگر کی پارلیمانی نشست سابق پی ڈی پی لیڈر طارق حمید قرہ کے پی ڈی پی اور بحیثیت پارلیمنٹ ممبر استعفیٰ دینے کے بعد خالی ہوگئی تھی۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سرینگر پارلیمانی حلقے میں رائے دہندگان کی کل تعداد 12 لاکھ 59 ہزار 638 ہے ۔
علیحدگی پسندوں کا بائیکاٹ ، کئی قائدین نظربند
٭  علیحدگی پسند جماعتوں نے انتخابات کے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے ۔ بائیکاٹ مہم چلانے سے روکنے کیلئے بیشتر علیحدگی پسند قائدین و کارکنوں کو یا تو اپنے گھروں میں نظر بند ، یا پولیس اسٹیشنوں میں رکھا گیا تھا۔سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ آزادانہ، منصفانہ اور شفاف انتخابات کو یقینی بنانے کیلئے سیکورٹی فورسیس کی درجنوں اضافی کمپنیاں تعینات کی گئی تھیں۔گذشتہ 15 برسوں میں ایسا پہلی بار دیکھنے کو ملا کہ جب انتخابی میدان میں شامل امیدوار نہ تو روڑ شوز اور نہ کھلے میدانوں میں انتخابی جلسوں کا انعقاد کرسکے ۔

TOPPOPULARRECENT