Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / وجئے مالیا کو 18 مارچ کو حاضر ہونے کی ہدایت

وجئے مالیا کو 18 مارچ کو حاضر ہونے کی ہدایت

انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ نے سمن جاری کیا ۔ کنگ فشر ائر لائین کے سینئر ایگزیکیٹیو سے پوچھ تاچھ
ممبئی 11 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ نے آج شراب کے بڑے تاجر وجئے مالیا کو سمن جاری کرتے ہوئے حاضری کیلئے طلب کیا ہے ۔ اس کے علاوہ انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کی جانب سے کنگ فشر ائر لائین کے ایک سینئر ایگزیکیٹیو سے آئی ڈی بی آئی بینک کو 900 کروڑ روپئے کے قرض کی ادائیگیوں میں بے قاعدگیوں کے تعلق سے پوچھ تاچھ بھی کی گئی ۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ وجئے مالیا کو سمن جاری کرتے ہوئے 18 مارچ کو پوچھ تاچھ کیلئے ڈائرکٹوریٹ میں رجوع ہونے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ ذرائع کے بموجب مالیا کو قانون انسداد غیرقانونی رقمی لین دین کے تحت نوٹس جاری کی گئی ہے اور ان سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے شخصی فینانسیس کے تعلق سے دستاویزات پیش کریں۔ یہ سمن آج ایسے دن جاری کئے گئے جب کنگ فشر ائر لائینس کے سابق چیف فینانشے آفیسر اے رگھوناتھن ڈائرکٹوریٹ کے تحقیقاتی عہدیداروں کے سامنے پیش ہوئے ۔ ذرائع نے بتایا کہ ہم نے رگھوناتھن کو طلب کیا تھا اور آج وہ پوچھ تاچھ کیلئے ہمارے دفتر پہونچے ہیں۔ ڈائرکٹوریٹ کے ایک عہدیدار کا کہنا ہے کہ معاشی معاملات پر معلومات حاصل کرنے کیلئے رگھوناتھن کی حاضری اور پوچھ تاچھ اہمیت کی حامل ہے۔ ڈائرکٹوریٹ کی جانب سے آئی ڈی بی آئی بینک کے علاوہ وجئے مالیا کی کنگ فشر ائر لائینس کے 6 عہدیداروں کو سمن جاری کرتے ہوئے ان سے اپنے اپنے شخصی فینانسیس اور ان کے انکم ٹیکس ریٹرنس کے تعلق سے تفصیلات پیش کرنے کو کہا گیا ہے ۔ یہ دستاویزات گزشتہ پانچ سال کے ہونے چاہئیں۔ عہدیدار کے بموجب گذشتہ ماہ ہوئی پوچھ تاچھ میں رگھوناتھن نے معاشی بحران کیلئے وجئے مالیا کو ذمہ دار قرار دیا تھا جس کے نتیجہ میں کنگ فشر ائر لائینس بند ہوئی تھی ۔ رگھوناتھن کا کہنا تھا کہ اس نے مالیا کے کہنے کے مطابق کام کیا تھا ۔

میں فرار نہیں ہوا ‘ مالیا کا ٹویٹ
نئی دہلی 11 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) بینکوں کو سینکڑوں کروڑ کی ادائیگی سے گریز کرنے والے شراب کے تاجر وجئے مالیا نے آج کہا کہ وہ فرار نہیں ہوئے ہیں اور ملک کے قانون کی پابندی کرینگے ۔ مالیا نے آج صبح کی اولین ساعتوں میں کسی نا معلوم مقام سے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ وہ بین الاقوامی تاجر ہیں۔ وہ ہندوستان سے باہر مسلسل سفر کرتے رہتے ہیں۔ وہ ہندوستان سے فرار نہیں ہوئے ہیں اور نہ ہی وہ مفرور ملزم ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایک ہندوستانی رکن پارلیمنٹ کی حیثیت سے وہ ملک کے قانون کا بہت احترام کرتے ہیں ۔ ہمارا عدالتی نظام بہترین اور معزز ہے ۔ تاہم میڈیا کو تبصرہ کی اجازت نہیں ہے ۔ انہوں نے میڈیا پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اگر میڈیا میں کچھ کہا جائے تو پھر یہ سلسلہ چلتا رہتا ہے اور سچ و حقائق کو ختم کردیا جاتا ہے ۔ میڈیا کو کئی برسوں سے انہوں نے جو مدد کی یا سہولیات فراہم کی ہیں وہ فراموش نہیں کی جانی چاہئیں۔

TOPPOPULARRECENT