Wednesday , August 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / وجیندر کی ریو اولمپکس میں شرکت سے دلچسپی، پروموٹر ناراض

وجیندر کی ریو اولمپکس میں شرکت سے دلچسپی، پروموٹر ناراض

ملک کی نمائندگی کا موقع کیونکر گنواؤں، پروفیشنل باکسر کا استفسار ۔ آپ کنٹراکٹ کے تابع ہو ، پروموٹر کا استدلال
نئی دہلی ، 7 جون (سیاست ڈاٹ کام) اولمپک برونز میڈلسٹ اور پروفیشنل باکسر وجیندر سنگھ جو سابق یورپین چمپئن کیری ہوپ سے ڈبلیو بی او ایشیا سوپر مڈل ویٹ ٹائٹل مقابلے میں 16 جولائی کو تھیاگراج اسٹیڈیم میں مکے بازی کریں گے، وہ ریو اولمپکس میں بھی شرکت کرنے کے خواہشمند ہیں۔ اولمپکس کیلئے کوالیفائر 3 جولائی کو وینزویلا میں طے ہے۔ وجیندر نے گزشتہ روز کہا: ’’چونکہ پرو باکسرز کو حصہ لینے کی اجازت ہے، اس لئے میں کوالیفائر کھیلنا چاہتا ہوں۔ یہ ملک کی نمائندگی کا معاملہ ہے، میں کیونکر یہ موقع گنواؤں۔‘‘ تاہم اُن کے برطانیہ سے تعلق رکھنے والے پروموٹر اور کوئنس بیری پروموشنس کے سربراہ فرانسیس وارن کو وجیندر کی خواہش پسند نہیں آئی۔ ’’اگر وہ وہاں جانا چاہتا ہے تو میں بالکلیہ خوش نہیں ہوں گا۔ جیسا کہ میں دیکھ رہا ہوں، (ہمارے پاس) وقت نہیں ہے۔ بے شک، وہ ذاتی طور پر آزاد ہیں، اُن کی اپنی رائے ہے لیکن وہ اس میں رکاوٹ نہیں ہوسکتے جو کچھ ہم نے اُن کیلئے منصوبہ بنایا ہے کیونکہ اس مقام تک پہنچنے کیلئے ایک سال لگا جہاں آج وہ ہیں۔ وہ ہمارے ساتھ کنٹراکٹ کی شرائط کے پابند بھی ہیں۔‘‘ اس کے باوجود وجیندر نے شاید اپنا ذہن بنالیا ہے۔ ’’ہاں، پروموٹرز میرے اولمپک پلان پر ناراضگی کے اظہار میں درست ہیں کیونکہ ہم بہ اعتبار کنٹراکٹ اُن سے قانونی طور پر جُڑے ہوئے ہیں۔ لیکن کسی کنٹراکٹ کا مطلب نہیں کہ انھیں میرے فیصلوں پر مکمل کنٹرول حاصل ہوچکا ہے۔ فیصلے میں خود کروں گا اور مل بیٹھ کر معاملوں کی یکسوئی کروں گا، چاہے اس کیلئے کوئی قانونی ضابطے کی تکمیل کیوں نہ کرنا پڑے۔ اگر مجھے معقول قانونی مشورہ ملے تو میں یقینا (ریو اولمپکس میں مسابقت کیلئے) جانا چاہتا ہوں۔‘‘ وجیندر نے مزید کہا: ’’میں جانتا ہوں پروموٹر نے کافی رقم خرچ کی ہے، لیکن آخرکار اگر میں خوش نہیں ہوں تو اس کا کوئی فائدہ نہیں۔ اگر وینزویلا میں موقع دستیاب ہو اور اگر مجھے کوالیفائی ہونا پڑے تو مجھے حکام کو مطلع کرنا ہوگا کہ میں کیا کرنے جارہا ہوں۔‘‘

TOPPOPULARRECENT