Friday , August 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / ورلڈ چمپئن شپ کے نتائج کا فٹنس پر انحصار : سائنا

ورلڈ چمپئن شپ کے نتائج کا فٹنس پر انحصار : سائنا

حیدرآبادی بیڈمنٹن اسٹار کی آنے والے ٹورنمنٹس کیلئے بنگلورو کی اکیڈیمی میں سخت ٹریننگ جاری

بنگلورو ، 24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کی بیڈمنٹن کوئن سائنا نہوال آنے والے ٹورنمنٹس بشمول ورلڈ چمپئن شپ کیلئے اپنے ’’کھیل اور ہنر‘‘ پر توجہ مرکوز کررہی ہیں، لیکن انھوں نے کہا کہ نتائج کا انحصار مجموعی فٹنس پر رہے گا۔ ’’میرا پرفارمنس میرے تجزیے کے مطابق لازماً بہترین ہونا چاہئے۔ مزید یہ کہ اس کا انحصار میری مجموعی بدنی صحت پر ہوتا ہے،‘‘ سائنا نے یہاں نیوز ایجنسی ’پی ٹی آئی‘ کو یہ بات بتائی۔ عالمی نمبر 2 ہندوستانی نے کہا کہ وہ آنے والے ٹورنمنٹس بشمول ورلڈ چمپئن شپ کیلئے کوچ ویمل کمار کی مسلسل نگرانی میں سخت محنت کررہی ہیں۔ انھوں نے کہا، ’’ہندوستان کی بیڈمنٹن کھلاڑی کی حیثیت سے میں سال 2015-16ء کیلئے ترتیب دیئے گئے لگ بھگ تمام ٹورنمنٹس کھیلتی ہیں۔ مثال کے طور پر ورلڈ کپ، جاپان اوپن، چائنا اوپن، ڈنمارک اوپن، فرانس اور ہانک کانگ اوپن ختم 2015ء تک منعقد ہوں گے‘‘۔ سائنا زائد از تین ہفتوں سے شہر میں ہیں اور یہاں پرکاش پڈوکون بیڈمنٹن اکیڈیمی میں ویمل کمار کی چوکس نگاہوں کے تحت ٹریننگ حاصل کررہی ہیں۔ 25 سالہ اسٹار میدان پر اور میدان سے باہر کی تربیت میں آٹھ گھنٹے صرف کررہی ہیں۔ چار گھنٹے کا وقت وہ بیڈمنٹن کی مشق میں لگا رہی ہیں اور اتنا ہی وقت وہ جیم میں صرف کرتی ہیں۔ انھوں نے کہا: ’’میں بنگلور میں ہوں، یعنی اکیڈیمی میں، لہٰذا میری مکمل توجہ میرے پرفارمنس پر مرکوز ہے۔ میرے کوچ میری تمام تر حوصلہ افزائی کررہے ہیں تاکہ میرے بہترین پرفارمنس کا مظاہرہ ہوجائے۔ میری ٹریننگ کا حصہ بہت اچھا ہے۔ مجھے تمام ممکنہ مدد اور سہولیات حاصل ہورہے ہیں جو بیڈمنٹن کھلاڑی کے کھیل اور مہارت میں بہتری کیلئے درکار ہیں۔‘‘ یہ سائنا کیلئے کامیابی کا سال رہا ہے، جو اپریل میں عالمی بیڈمنٹن میں نمبر ایک درجہ تک پہنچنے والی اولین ہندوستانی خاتون شٹلر بنیں۔ وہ بعد میں سلسلہ وار عروج و زوال سے گزریں اور پھر گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے نمبر 2 پوزیشن پر قائم ہیں۔ سائنا نے کہا کہ نمبر ایک ساکت نہیں رہتا ہے، یہ وقت اور پرفارمنس کے ساتھ تبدیل ہوتا ہے۔ چینی لڑکی لی ژویروئی جو لگ بھگ پورا سال نمبر ایک رہی، گھٹ کر تیسری پوزیشن تک پہنچ چکی ہے۔ حیدرآباد سے تعلق رکھنے والی اسٹار نے کہا کہ وہ اپنا نمبر ایک مقام کچھ پُراستقلال پرفارمنس کے ذریعہ دوبارہ حاصل کرسکتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT