Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ورنگل ضمنی انتخاب ، کے ٹی آر کے گلف متاثرین پر مگرمچھ کے آنسو

ورنگل ضمنی انتخاب ، کے ٹی آر کے گلف متاثرین پر مگرمچھ کے آنسو

سیاست کی 12 فیصد تحفظات تحریک میں عوام کا مثبت ردعمل ، محمد علی شبیر کا بیان
حیدرآباد ۔ 6 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر نے ورنگل ضمنی انتخاب کے پیش نظر گلف متاثرین پر مگرمچھ کے آنسو بہانے کا ریاستی وزیر آئی ٹی و پنچایت راج مسٹر کے ٹی آر پر الزام عائد کیا ۔ روزنامہ سیاست کی جانب سے چلائی جارہی ہے 12 فیصد مسلم تحفظات پر تلنگانہ کے تمام اضلاع سے مثبت ردعمل حاصل ہونے کا دعویٰ کیا ہے ۔ آج سی ایل پی آفس اسمبلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ ٹی آر ایس نے 18 ماہی دور اقتدار میں خلیجی ممالک میں مسائل سے دوچار مزدوروں کی فلاح و بہبود کے لیے کوئی عملی اقدامات نہیں کئے یہاں تک کہ ٹی آر ایس نے اپنے انتخابی منشور میں این آر آئیز کے لیے علحدہ وزارت تشکیل دینے اور معقول بجٹ مختص کرنے کا وعدہ کیا تھا جس پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے خلیجی ممالک کے بشمول دوسرے ممالک میں خدمات انجام دینے والے ملازمین اور مزدوروں نے اپنے ذاتی اخراجات پر تلنگانہ میں ٹی آر ایس کے حق میں انتخابی مہم چلائی تھی کامیابی کے 18 ماہ بعد بھی ٹی آر ایس حکومت نے گلف متاثرین سے کئے گئے وعدوں کی تکمیل نہیں کی اور نہ ہی ان کے مسائل کی یکسوئی کے لیے کبھی مرکزی حکومت سے کوئی موثر نمائندگی کی ہے ۔ مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ تلنگانہ کے 10 لاکھ نوجوان خلیجی ممالک میں خدمات انجام دے رہے ہیں اور 12000 نوجوان جیلوں میں قید ہے ۔ ٹی آر ایس کے اقتدار میں آنے کے بعد سے اب تک 400 نوجوان خلیجی ممالک میں مختلف حادثات میں ہلاک ہوئے ہیں ۔ ان کے بارے میں آج تک حکومت کی جانب سے کچھ نہیں کیا گیا ہے ۔ جب کہ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر ان کی دختر رکن پارلیمنٹ مسز کویتا اور ریاستی وزیر آئی ٹی و پنچایت راج مسٹر کے ٹی آر گلف و دیگر ممالک کا دورہ کرتے ہوئے صرف سیاسی تماشہ کیا ہے ۔ ان کے مسائل کو حل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں ہے ۔ کانگریس کے دور حکومت میں این آر آئیز کے لیے علحدہ سیل قائم کیا گیا جس کے وہ انچارج وزیر تھے ۔ انہوں نے مرکزی حکومت اور خلیجی ممالک کے درمیان پل کا رول ادا کرتے ہوئے مختلف مسائل سے دوچار 42 ہزار نوجوانوں کو خصوصی پاسپورٹ تیار کرتے ہوئے لایا گیا تھا اور کئی نوجوانوں کے واپسی اخراجات کانگریس حکومت برداشت کی تھی ۔ بیرونی ممالک میں روزگار حاصل کرنے کے لیے اسکل سنٹرس قائم کئے گئے تھے ۔ تلنگانہ میں جمہوری نہیں بلکہ ایک خاندان کی حکمرانی ہے ۔ گلف متاثرین کے مسائل پر چیف منسٹر کے بجائے ان کے فرزند کی مرکزی وزیر خارجہ سے ملاقات کرنے کا اعلان اس کا ثبوت ہے ۔ ریاست میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے ۔ اقتدار فارم ہاوز سے چل رہا ہے ۔ مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ ٹی آر ایس کے منشور میں عوام سے کئے گئے وعدوں میں ایک وعدہ بھی پورا نہیں کیا گیا جس سے سماج کے تمام طبقات حکومت ٹی آر ایس سے ناراض ہے اور ورنگل لوک سبھا کے ضمنی انتخاب میں کانگریس کے امیدوار مسٹر سروے ستیہ نارائنا کو شکست دیتے ہوئے ٹی آر ایس کو سبق سکھانے کا عوام نے فیصلہ کرلیا ہے ۔ روزنامہ سیاست کی جانب سے 12 فیصد مسلم تحفظات کے لیے چلائی جانے والی تحریک پر تلنگانہ کے عوام بالخصوص زبردست ردعمل کا اظہار کررہے ہیں ۔ اضلاع میں بڑے پیمانے پر اپنی اپنی سطح پر تحریک میں حصہ لیتے ہوئے وعدے کو پورا کرنے کا جمہوری انداز میں حکومت پر دباؤ بنا رہے ہیں۔۔

TOPPOPULARRECENT