Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / ورنگل لوک سبھا حلقہ کیلئے امیدوار کی تلاش ‘ کانگریس سرگرم

ورنگل لوک سبھا حلقہ کیلئے امیدوار کی تلاش ‘ کانگریس سرگرم

صدر پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی اور سابق ایم پی جی ویویک کو ہائی کمان نے دہلی طلب کیا
حیدرآباد ۔ 27 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز): کانگریس ہائی کمان نے ورنگل لوک سبھا ضمنی انتخاب کیلئے امیدوار کے نام پر غور کرنے صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کیپٹن اتم کمار ریڈی کے بشمول سابق رکن پارلیمنٹ مسٹر جی ویویک کو دہلی طلب کرلیا ہے ۔ کانگریس کی جانب سے ورنگل لوک سبھا ضمنی انتخابات کیلئے بڑے پیمانے پر تیاریاں کی جارہی ہیں ۔ کانگریس ہائی کمان کی جانب سے طلب کرنے پر کیپٹن اتم کمار ریڈی آج صبح دہلی پہونچ چکے ہیں ۔ ساتھ ہی حکمران ٹی آر ایس کا پیشکش ٹھکرانے والے کانگریس کے سابق رکن پارلیمنٹ مسٹر جی ویویک کو بھی ہائی کمان نے طلب کیا ہے ۔ وہ بھی دہلی پہونچ گئے ہیں ۔ حلقہ لوک سبھا ورنگل کے ضمنی انتخاب میں امیدوار کے مسئلہ پر کانگریس گروپ بندیوں کا شکار ہے ۔ ورنگل کے عوام مقامی قائد کو امیدوار بنانے کا مطالبہ کررہے ہیں جبکہ تلنگانہ کانگریس ٹی آر ایس کو سخت مقابلہ دینے والے امیدوار کو انتخابی میدان میں اتارنے کے حق میں ہے ۔ ہائی کمان میں سابق مرکزی مملکتی وزیر مسٹر سروے ستیہ نارائنا و سابق ایم پی مسٹر جی ویویک کے علاوہ دوسرے مقامی قائدین کے ناموں پر غور کیا جارہا ہے ۔ ورنگل کے سابق ایم پی مسٹر راجیا بھی دوڑ میں ہیں ۔ تاہم کانگریس طاقتور امیدوار کو میدان میں اتار کر ٹی آر ایس کو بہت بڑا جھٹکا دینے کا ارادہ رکھتی ہے ۔ سابق ایم پی جی ویویک مقابلہ کیلئے تیار نہیں ہیں ۔ انہوں نے ٹی آر ایس کی پیشکش کو بھی ٹھکرادیا ہے تاہم ہائی کمان انہیں امیدوار بنانے کے حق میں ہے اور انہیں مقابلہ کیلئے راضی کرانے دہلی طلب کیا گیا ہے ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس نے کہا کہ ورنگل لوک سبھا ضمنی انتخابات میں کانگریس کیلئے ماحول سازگار ہے اور پارٹی کا امیدوار ایک لاکھ ووٹوں کی اکثریت سے کامیابی حاصل کریگا ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس جلد امیدوار کا اعلان کریگی ۔ ٹی آر ایس اپنے دیڑھ سالہ دور میں ایک بھی وعدے کو پورا نہ کرکے عوام کے اعتماد سے محروم ہوگئی ہے اور کانگریس نے اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کرکے عوام کے دلوں میں اپنا کھویا ہوا مقام حاصل کرلیا ہے ۔ کانگریس ضمنی انتخاب کیلئے پوری طرح تیار ہے اور کانگریس کیڈر عوام کے درمیان پھیل چکا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT