Friday , October 20 2017
Home / ہندوستان / وزارت داخلہ کے عہدیدار 5 یوم کیلئے سی بی آئی تحویل میں

وزارت داخلہ کے عہدیدار 5 یوم کیلئے سی بی آئی تحویل میں

نئی دہلی ۔ 16 ۔ مئی (سیاست ڈاٹ کام) دہلی کی ایک عدالت نے آج مرکزی وزارت داخلہ میں برسر خدمت انڈر سکریٹری آنند جوشی کو 5 دن کیلئے سی بی آئی تحویل میں دیدیا جبکہ بیرونی عطیات حاصل کرنے والی رضاکارانہ تنظیموں کے خلاف بیجا کارروائی کیلئے انہیں مورد الزام ٹھہرایا ہے ۔ خصوصی سی بی آئی جج ونود کمار نے آنند جوشی سے پوچھ تاچھ کیلئے تحقیقاتی ایجنسی کو اجازت دیدی ہے جنہیں کل جنوبی دہلی سے گرفتار کرلیا گیا ہے۔ جوشی کو اپنی تحویل میں دینے کی درخواست کرتے ہوئے سی بی آئی نے یہ استدلال پیش کیا کہ سینکڑوں رضاکارانہ تنظیموں سے متعلق فائیلس وزارت داخلہ سے غائب ہوگئی ہیں جو کہ ان کی قیامگاہ سے بازیاب کرلی گئی ہے ۔ سی بی آئی نے یہ بھی شکایت کی کہ تحقیقات میں وہ تعاون کر رہے ہیں اور نہ ہی حقائق کے بارے میں کوئی انکشاف کر رہے ہیں اور یہ معلوم کرنا ضروری ہے کہ اہم فائلس  ان کے مکان کیسے پہنچ گئی۔ سی بی آئی نے عدالت میں یہ الزام عائد کیا کہ آنند جوشی نے FCRA2010 کے تحت رجسٹرڈ رضکارانہ تنظیموں اور سوسائٹیز کو بدنیتی کے ساتھ نوٹسیں جاری کی ہیں جوکہ قواعد کے مطابق بیرونی عطیات حاصل کرنی ہیں۔ ان تنظیموں میں کیر انڈیا ، اسنہالیہ چیرٹیبل ٹرسٹ، انڈین ایچ آئی وی / ایڈس الائینس اور آل انڈیا پرائمری ٹیچرس فیڈریشن کے نمائندوں نے الزام عائد کیا ہے ۔ جوشی نے انہیں طلب کر کے بھاری رشوت حاصل کی ہے ۔ وزارت داخلہ سے غائب فائیلوں میں سماجی جہد کار تیستا ستیلواد کی تنظیم سب رنگ ٹرسٹ بھی شامل ہے۔

TOPPOPULARRECENT