Thursday , August 24 2017
Home / ہندوستان / وزارت پٹرولیم کے دستاویزات کا افشاء

وزارت پٹرولیم کے دستاویزات کا افشاء

نئی دہلی ۔ 18 ۔ نومبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : دہلی کی عدالت نے آج وزارت پٹرولیم دستاویزات افشاء کیس میں ماخوذ ایک ملزم کو نا مکمل چارج شیٹ کی کاپیاں ( نقولات ) سربراہ کرنے سٹی پولیس کو ہدایت دی ہے ۔ جس پر دہلی پولیس کرائم برانچ نے تیقن دیا کہ ملزم کو نا مکمل دستاویزات فراہم کردی جائے گی ۔ چیف میٹرو پالیٹن مجسٹریٹ مسٹر سنجے کھنگوال نے کیس کی سماعت کو آئندہ سال 4 فروری تک ملتوی کردی ۔ پولیس نے اس کیس میں 13 ملزمین بشمول 5 کارپوریٹ اکزیکٹیوز سلیش سکسینہ ( ریلائنس انڈسٹری ) ، ونئے کمار ( ایسار ) ، کے کے نائک ( کیروسن انڈیا ) سبھاش چندرا ( جوبلینٹ انرجی ) اور رشی آنند ( ریلائنس ADAG ) کے خلاف چارج شیٹ داخل کیا ہے ۔ یہ تمام ملزمین ضمانت پر رہا کردئیے گئے ہیں ۔ قبل ازیں وزارت پٹرولیم اور قدرتی گیس نے عدالت کو مطلع کیا تھا کہ تحقیقات کے دوران ملزمین کی تحویل سے برآمد 8 دستاویزات راز دارانہ نوعیت کے ہیں جس میں سے کسی ایک کو بھی منظر عام نہیں لایا جاسکتا ۔ کرائم برانچ پولیس نے ملزمین کے خلاف مختلف قانونی ضابطوں کے تحت کیس درج کئے تھے ۔ جب کہ پولیس نے 20 فروری کو 5 کارپوریٹ ایگزیکٹیوز کو سرکاری عہدیداروں للت پرساد اور راکیش کمار سے بھاری رقومات ادا کر کے خفیہ دستاویزات حاصل کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا تھا ۔ یہ دستاویزات خانگی فرمس کو ان کے فوائد کے لیے سربراہ کئے گئے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT