Monday , June 26 2017
Home / Top Stories / وزیراعظم نریندر مودی ،’’ایشیا۔ افریقہ ترقی‘‘ کی راہ داری کے متمنی

وزیراعظم نریندر مودی ،’’ایشیا۔ افریقہ ترقی‘‘ کی راہ داری کے متمنی

چین کے ’’ایک پٹی ایک راہ‘‘ پالیسی شروع کرنے کے چند دن بعد ہندوستان کے افریقی ملکوں کے ساتھ مضبوط تعلقات
گاندھی نگر۔ 23 مئی (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے ایشیا ۔ افریقہ ترقی کی راہ قائم کرنے کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جاپان اور ہندوستان کی جانب سے ایسی راہ داری کی بھرپور حمایت کی گئی ہے۔ چین نے حال ہی میں ’’ایک پٹی ایک راہ‘‘ کی اپنی پالیسی پر عمل آوری کا آغاز کردیا ہے جس کے چند دن بعد ہی ہندوستان نے ’’ایشیا ۔ افریقہ ترقی کی راہ‘‘ کو وسعت دینے کی کوشش کی ہے۔ افریقی ڈیولپمنٹ بینک گروپ کے 52 سالانہ جنرل اجلاس کے دوران اعلان کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے افریقی ملکوں کے ساتھ ہندوستان کی اولین ترجیح پالیسی کا ذکر کیاہے۔ ہندوستان، جاپان سے مل کر کام کررہا ہے تاکہ افریقہ میں ترقی کے کاموں کی حمایت کی جائے۔ انہوں نے گزشتہ سال ٹوکیو میں وزیراعظم جاپان شینزو ابے سے اپنی ملاقات کا بھی تذکرہ کیا اور کہا کہ یہ ملاقات بامقصد اور ترقی کی راہ کو کشادہ کرنے میں معاون ثابت ہوئی تھی۔ وزیراعظم نریندر مودی نے اپنی افتتاحی تقریر میں کہا کہ ہم نے اپنے مشترکہ اعلامیہ میں ایشیا۔ افریقہ ترقی کی راہ کا تذکرہ کیا تھا اور افریقہ کے اپنے بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ مزید مشاورت کی تجویز بھی رکھی تھی۔ وزیراعظم کی ایشیا ۔ افریقہ ترقی کی راہ کی یہ تجویز ایک ایسے وقت سامنے آئی ہے جبکہ چین نے حال ہی میں اپنی ملٹی بلین ڈالرس کے ایک پٹی ایک راہ UBOR اقدامات کئے ہیں۔ یہ چین کے صدر ژی ژنگ کا پسندیدہ پروگرام ہے جس کا مقصد یورو ۔ ایشین لینڈماس اور انڈو پیسیفک میری ٹائم کی راہوں کو مربوط کرنا ہے۔

ہندوستان اور جاپان ریسرچ انسٹی ٹیوشن نے ایک ویژن دستاویز تیار کی ہے جس کو افریقہ کے تھنک ٹینک کے ساتھ مشاورت کے بعد ہی تیار کیا گیا ہے۔ مودی نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ اس ویژن دستاویز کو بعدازاں بورڈ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ ہمارا مقصد یہ ہے کہ ہندوستان اور جاپان دیگر خواہشمند ملکوں کے ساتھ مل کر ترقی، انفارمیشن ٹیکنالوجی، مینوفیکچرنگ، صحت اور رابطہ کاری جیسے شعبوں میں مشترکہ طور پر کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ افریقہ ہی ترقی کے میدان میں ہندوستان کی ترجیح فہرست میں سرفہرست ہے۔ 2014ء میں وزارت عظمیٰ کی ذمہ داری سنبھالنے کے بعد میں نے افریقہ کو ہی ہندوستان کی خارجی اور معاشی پالیسی کے لئے سرفہرست بنادیا تھا۔ وزیراعظم مودی نے زیادہ تر افریقہ سے تعلق رکھنے والے 300 مندوبین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کو ترقی کی راہ میں بہت آگے نکلنا ہے تو افریقہ کے ساتھ مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ اس اجلاس میں سربراہان مملکت کے علاوہ حکومت کے سینئر عہدیدار بھی شریک تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اس وقت امریکہ سے سرمایہ کاری کرنے والا پانچواں سب سے بڑا سرمایہ کار ہے۔ گزشتہ 20 سال کے دوران اس نے 54 بلین امریکی ڈالر کی سرمایہ کاری کی ہے۔ افریقہ ۔ ہند تجارت 15 سال میں دوگنی ہوگئی ہے۔ گزشتہ پانچ سال کے دوران یہ تجارت 72 بلین ڈالرس کے قریب پہونچ گئی۔ وزیراعظم مودی نے افریقہ کے ساتھ ہندوستان کے صدیوں پرانے روابط کا تذکرہ کیا۔ خاص کر تاجر برادری کے درمیان جو مغربی ریاستوں جیسے گجرات سے تعلق رکھتے ہیں۔ افریقہ سے روابط شاندار ہیں۔ انہوں نے تیقن دیا کہ ہندوستان ہمیشہ ہی افریقہ کے بہتر مستقبل کیلئے کام کرے گا۔ انہوں نے مزاحیہ انداز میں کہا کہ ہندوستان اگرچیکہ طویل فاصلے کی دوڑ میں افریقہ کے ساتھ مسابقت نہیں کرسکتا لیکن میں آپ کو یہ یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ہندوستان آپ کے ساتھ ساتھ شانہ بشانہ کھڑا رہے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT