Monday , August 21 2017
Home / عرب دنیا / وزیراعظم نریندر مودی کا دو روزہ دورۂ متحدہ عرب امارات

وزیراعظم نریندر مودی کا دو روزہ دورۂ متحدہ عرب امارات

کسی ہندوستانی وزیراعظم کا 34 سال بعد سرکاری دورہ ،باہمی تجارتی ، ثقافتی اور ہندوستانی تارکین وطن کے مسائل موضوعات

دبئی۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کے وزیراعظم گزشتہ 34 سال میں پہلی بار متحدہ عرب امارات کا دورہ کریں گے۔ نریندرمودی 16 تا 17 اگست دو روزہ سرکاری دورہ پر متحدہ عرب امارات جائیں گے جس کے دوران وہ مقامی قیادت سے تجارت اور صیانت اور ہندوستانی برادری کی شکایات کی یکسوئی کے اہم موضوعات پر تبادلہ خیال کریں گے، حالانکہ ان کے دورہ کا سرکاری طور پر کوئی اعلان نہیں کیا گیا ہے تاہم سرکاری ذرائع کے بموجب وزیراعظم نریندر مودی اپنے دو روزہ سرکاری دورہ میں ابوظہبی اور دبئی بھی جائیں گے جہاں توقع ہے کہ ہند ۔ متحدہ عرب امارات کے معاشی، ثقافتی اور سماجی تعلقات زیادہ مستحکم ہوں گے۔ ان کا دورہ گزشتہ 34 سال میں کسی وزیراعظم ہند کا پہلا دورہ متحدہ عرب امارات ہے۔

آنجہانی وزیراعظم اندرا گاندھی قبل ازیں 1981ء میں متحدہ عرب امارات کے دورہ پر گئی تھیں۔ وزیراعظم مودی کا دورہ اس لئے بھی عظیم اہمیت رکھتا ہے، کیونکہ مختلف معاہدوں خاص طور پر انسداد دہشت گردی اور بحری صیانت میں اضافہ کے شعبوں میں معاہدات پر عمل آوری میں بہت کم پیشرفت دیکھی گئی ہے۔ ہندوستان کے وزیراعظم کے دورہ سے توقع ہے کہ باہمی تعاون کلیدی شعبوں میں زیادہ ہوگا۔ تجارت اور سرمایہ کاری کے تعلقات میں اضافہ ہوگا جو متحدہ عرب امارات اور ہندوستان کی شراکت داری کا سنگ بنیاد ہیں۔ سرکاری اعداد و شمار کے بموجب متحدہ عرب امارات، ہندوستان کا دوسرا سب سے بڑا برآمداتی مرکز ہے۔ 30 ارب امریکی ڈالر مالیتی برآمدات سال 2013-14ء کے دوران ریکارڈ کی گئی ہیں۔ ہندوستان کی نقل مقام کرنے والی برادری متحدہ عرب امارات میں سب سے بڑی نسلی برادری ہے۔ ملک کی جملہ آبادی کا تقریباً 30 فیصد ہندوستانی نقل مقام کرنے والوں پر مشتمل ہے۔ ہندوستانی برادری وزیراعظم نریندر مودی کا دبئی کے کرکٹ اسٹیڈیم گراؤنڈس پر شاندار استقبال کرنے کا پروگرام بنا رہی ہے۔ ایک تنظیمی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے تاکہ اس تقریب کو شاندار کامیابی سے ہمکنار کیا جاسکے۔ ٹرانسپورٹ کے انتظامات قریب ترین میٹرو اسٹیشنس دبئی مال اور دبئی انٹرنیشنل سٹی سے برادری کے ارکان کو استقبالیہ میں شرکت میں سہولت فراہم کرنے کے مقصد سے کئے جارہے ہیں۔ ہندوستانی برادری فلاحی تنظیم نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ جسے ویب سائیٹ اور فیس بک کے صفحہ پر شائع کیا گیا ہے۔ ہندوستانی برادری کی سہولت کی خاطر فیس بک کا ایک صفحہ قائم کیا گیا ہے تاکہ استقبالیہ تقریب کے بارے میں تفصیلات ہندوستانی اس صفحہ سے حاصل کرسکیں۔

TOPPOPULARRECENT