Wednesday , August 23 2017
Home / دنیا / وزیراعظم پاکستان کو صدرامریکہ کا مشورہ

وزیراعظم پاکستان کو صدرامریکہ کا مشورہ

سب عسکریت پسند یکساں  : امریکہ ‘ لشکرطیبہ کے بارے میں پاکستان کا تیقن نئی بات نہیں

واشنگٹن۔25اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر امریکہ بارک اوباما نے آج وزیراعظم پاکستان نواز شریف پر واضح کردیا کہ پاکستان کو دہشت گرد گروپس کے درمیان کوئی فرق اور امتیاز نہیں کرنا چاہیئے ۔ وائیٹ ہاؤز ایک بیان میں کہا گیا کہ تمام دہشت گرد یکساں ہوتے ہیں ۔ ڈپٹی پریس سکریٹری ہیرک ٹوئز نے اپنی روزآنہ پریس کانفرنس میں کہا کہ پاکستان صرف حکومت پاکستان کے مخالف دہشت گردوں کو حملہ کا نشانہ بناتا ہے اور دیگر دہشت گردوں کی سرگرمیوں کو نظرانداز کردیتا ہے ‘یہ پالیسی درست نہیں کیونکہ تمام دہشت گرد یکساں ہوتے ہیں ۔ دریں اثناء پاکستان نے کہا کہ وہ لشکر طیبہ کو کچلنے کے عہد کا پابند ہے اور اس میں کوئی نئی بات نہیں ہے ۔  پاکستان ہمیشہ سے ہی لشکرطیبہ اور اُس سے ملحق تنظیموں کو کچلنے کے عہد کا پابند ہے ۔ پاکستان کے مشیر قومی سلامتی و خارجہ اُمور سرتاج عزیز نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا  کہ پاکستان ہمیشہ سے ہی دہشت گردوں کا صفایا کرنے کے عہد کا پابند رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کیلئے امریکہ کی دخل اندازی کا پاکستان نے کوئی مطالبہ نہیں کیا ہے ۔ یہ صرف پاکستان کی ایک خواہش ہے ۔ اُس نے اس مسئلہ پر پاکستانیوں کی خواہشات کی ایک فہرست امریکہ کو پیش کردی ہے ۔ وزیراعظم نواز شریف نے اقوام متحدہ میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ بین الاقوامی برادری کو جان لینا چاہیئے کہ مسئلہ کشمیر ہندوستان اور پاکستان کا باہمی مسئلہ نہیں ہے کیونکہ دونوں بھی تاحال اس کی یکسوئی سے قاصر رہے ہیں ۔ اس لئے ہمیں خواہش ہے کہ کوئی تیسرا فریق ( امریکہ) اس مسئلہ کی یکسوئی کیلئے ثالثی کے فرائض انجام دیں ۔

TOPPOPULARRECENT